Thursday , September 20 2018
Home / ہندوستان / طلاق ثلاثہ مسودہ قانون سپریم کورٹ فیصلہ کی خلاف ورزی

طلاق ثلاثہ مسودہ قانون سپریم کورٹ فیصلہ کی خلاف ورزی

کانگریس کا بیان، مجوزہ قانون سپریم کورٹ کی شرائط کی تکمیل سے قاصر رہنے کاادعا
نئی دہلی ۔ 15 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امکان ہیکہ کانگریس مجوزہ مسودہ قانون برائے طلاق ثلاثہ کو سپریم کورٹ کے اس معاملہ پر فیصلہ کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے اس کی مخالفت کرے گی۔ پارٹی کے ترجمان ابھیشیک سنگھوی نے آج کہا کہ پارٹی مجوزہ مسودہ قانون کی حمایت کرسکتی ہے۔ اگر یہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق ہو۔ انہوں نے کہا کہ تاہم مجوزہ مسودہ قانون سپریم کورٹ کے فیصلہ کی خلاف ورزی کرتا اور اس کے مقررہ طریقہ کار سے تجاوز کرتا ہے۔ اس لئے ہمیں اپنے موقف پر ازسرنو غور کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی نے مجوزہ قانون سازی کے متن کا ہنوز مشاہدہ نہیں کیا ہے جسے ابھی تک پارلیمنٹ کے حوالہ نہیں کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی مجوزہ قانون اگر انسانی کارروائی کو مجرمانہ رنگ دینا چاہتا ہے جیسا کہ یہ مجوزہ مسودہ قانون بھی سمجھا جاتا ہیکہ کررہا ہے۔ مقدمہ میں فیصلہ کے 5 پہلو ہیں ان میں سے مجوزہ قانون کو کم از کم چار پہلوؤں کی تکمیل کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ فوری طلاق ثلاثہ کو یہ مسودہ قانون غیرقانونی اور کالعدم قرار دینا چاہتا ہے اور شوہر کیلئے سزائے قید کی تجویز ہے جس کو مرکزی کابینہ نے آج منظوری دے دی ہے۔ اس منظوری سے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس سے جس کا آغاز ہوچکا ہے، پیش کرنے کی راہ ہموار ہوتی ہے۔ مرکزی وزیر قانون روی شنکر پرساد نے بھی شادی کے مسودہ قانون کے ذریعہ مسلم خواتین کے حقوق کا تحفظ کرنے کی توثیق کی ہے۔ تاہم تفصیلات پارلیمنٹ کے آئندہ سیشن میں ہی پیش کی جائیں گی۔ یہ مجوزہ مسودہ قانون ایسے وقت پارلیمنٹ میں پیش کرنے کی تجویز ہے جبکہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کے باوجود فوری طلاق ثلاثہ کا رواج عملاً جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT