Tuesday , December 11 2018

طلاق ثلاثہ پر امتناع کے مسودہ قانون کو کابینی منظوری

نئی دہلی 15 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے آج ایک مسودہ قانون کو منظوری دیدی جس کے تحت طلاق ثلاثہ دینے کا عمل منسوخ، کالعدم اور غیر قانونی ہوجائے گا اور اس قسم کی طلاق دینے والے شوہر کو تین سال کی سزائے قید ہوسکتی ہے۔ ایک سرکاری ذمہ دار نے یہ اطلاع دیتے ہوئے مزید کہاکہ ’شادی بیاہ پر مسلم خواتین تحفظ حقوق بل‘ پر مرکزی کابینہ نے غور و خوض کیا تھا جس کے بعد یہ منظوری دی گئی ہے۔ وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ کی قیادت میں ایک بین وزارتی گروپ نے یہ مسودہ قانون تیار کیا تھا۔ اس گروپ کے دیگر ارکان میں وزیر خارجہ سشما سوراج، وزیر فینانس ارون جیٹلی، وزیر قانون روی شنکر پرساد اور ان کے جونیر پی پی چودھری شامل ہیں۔ مجوزہ قانون صرف طلاق ثلاثہ یا طلاق بدعت دینے والوں پر ہی لاگو ہوگا اور طلاق کے اس عمل سے متاثرہ بیوی کو خود اپنے اور اپنے نابالغ بچوں کے گزارے کے لئے نان و نفقہ کا مطالبہ کرتے ہوئے مجسٹریٹ سے رجوع ہونے کا خود اختیار حاصل رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT