Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / طلباء و طالبات کے اندر تخلیقی اور تنقیدی صلاحیتوں کو فروغ دیا جائے

طلباء و طالبات کے اندر تخلیقی اور تنقیدی صلاحیتوں کو فروغ دیا جائے

حیدرآباد ۔ 21 ۔ جنوری : ( پریس نوٹ ) : ڈاکٹر قاضی سراج اظہراسسٹنٹ پروفیسر‘ فلینٹ ایرا سائنس فیر مشی گن امریکہ نے اساتذہ کو مشورہ دیا کہ وہ طلباء و طالبات کے اندر تخلیقی اور تنقیدی صلاحیتوں کو فروغ دیں اور سائنس کی تعلیم سے لگاؤ پیدا کرنے کے لئے سائنس فیرس کا انعقاد عمل میں لائیں۔وہ یہاں نیو روزری ہائی اسکول سالار جنگ کالونی کے زیراہت

حیدرآباد ۔ 21 ۔ جنوری : ( پریس نوٹ ) : ڈاکٹر قاضی سراج اظہراسسٹنٹ پروفیسر‘ فلینٹ ایرا سائنس فیر مشی گن امریکہ نے اساتذہ کو مشورہ دیا کہ وہ طلباء و طالبات کے اندر تخلیقی اور تنقیدی صلاحیتوں کو فروغ دیں اور سائنس کی تعلیم سے لگاؤ پیدا کرنے کے لئے سائنس فیرس کا انعقاد عمل میں لائیں۔وہ یہاں نیو روزری ہائی اسکول سالار جنگ کالونی کے زیراہتمام منعقدہ ساتویں انٹرنیشنل سائنس فیر 2015کے موقع پر مخاطب کررہے تھے ۔اس سائنس فیر میں نیؤ روزری ہائی اسکول کے بشمول اشر ف المدارس ‘ ماؤنٹ مرسی‘ ایم ایس کریٹیو اسکول‘ امیج اسکول ‘ اردو ماڈل اسکول اور عروہ ماڈل اسکول کے طلباء و طالبات نے حصہ لیا ۔جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر سیاست کے ہاتھوں سائنس فیر میں بہترین مظاہرہ کرنے والوں میں انعامات کی تقسیم عمل میں آئی اور اسکول ٹیچرس غفور انساء ‘ سیدہ فاطمہ انساء ‘ درگا بائی اور مسٹر اوم کار کو مومنٹوز پیش کئے گئے۔ شہ نشین پر محترمہ نسرین فاطمہ ‘ محترمہ کشور ‘ محمد اعظم پی آر او شاداں گروپ اور دیگر موجود تھے ۔ڈاکٹر قاضی سراج اظہر نے کہا کہ درس و تدریس انتہائی باوقار اور باعزت پیشہ ہے اور اساتذہ ملک و قوم کے معمار ہوتے ہیں انہیں چاہئے کہ وہ طلباء و طالبات میں سائنس کی دلچسپی پیدا کریں اور روزمرہ پیش آنے والے مسائل کو ذہن میں رکھتے ہوئے پراجکٹس بنائیں ۔ انہوں نے سائنس فیر اور سائنس نمائش کے فرق کو واضح کرتے ہوئے کہاکہ سانس نمائش میں مختلف ماڈلس کی تیاری سے بچوں میں تخلیقی صلاحیت پیدا نہیں ہوگی لیکن سائنس فیر کے ذریعہ بچوں میں غورو فکر اور ریسرچ کے جذبہ کو فروغ دیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے حیدرآباد میں کارکرد اسکولس کے انتظامیہ سے اپیل کی کہ انہیں ایک ابن سینا یا سی وی رامن دیں ۔ جناب عامر علی خاں نے سائنس کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالی اور کہا کہ اسلام اور سائنس کا گہرا تعلق ہے اور ہماری روزمرہ کی زندگی میں پیش آنے والے واقعات پر اگر غور کیا جائے تو یہ سائنس کے متعلق ہوتے ہیں ۔ محترمہ نسرین فاطمہ پرنسپل نیو روزری ہائی اسکول نے کہا کہ ان کے اسکول کے ایک طالب علم خواجہ سمیر احمد جو آٹھویں جماعت میں زیر تعلیم ہے انہوں نے چینائی میں منعقدہ نیشنل سائنس فیر میں انعام اول حاصل کیا ہے ۔

یہاں اس بات کا ذکر بے جا نہ ہوگا کہ اس سائنس فیر میں ملک بھر کے سینکڑوں طلباء و طالبات نے شرکت کئے اور نیو روزی اسکول کے طالب علم کا مظاہرہ اور انعام تمام حیدرآبادیوں کے لیے ایک اعزاز ہے ۔ محترمہ نسرین فاطمہ نے کہا کہ نیو روزری اسکول کے پروگرامس کا مقصد یہی ہے کہ طلباء و طالبات کے اندر تخلیقی صلاحیتوں کو پروان چڑھایا جائے اور ان کی مجموعی ترقی کو یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ اسکول انتظامیہ کی جانب سے طلباء و طالبات کی کمیونیکیشن اسکلس کو نکھارنے کے لئے خصوصی توجہ دی جاتی ہے ۔نیو روزری اسکول میں منعقدہ سائنس فیر میں محترمہ دیبا فرحین‘ ڈاکٹر ارجمند آراء پرنسپل شاداں کالج آف ایجوکیشن‘ محترمہ ملیحہ فریسا پرنسپل اوسی اسکول آف ایکسلنس‘ محترمہ کیشور ‘ محترمہ سرینواس کازا نے ججس کی حیثیت سے اپنے فرائض انجام دئیے ۔ نیو روزری اسکول کے زیر اہتمام منعقدہ سائنس فیر میں اطراف واکناف کے اسکولس کے اساتذہ اورسینکڑوں طلباء و طالبات نے شرکت کی جن میں گرونانک کالج آف انجینئرنگ کے علاوہ کرؤن اسکول‘ ویزڈم اسکول و دیگر اسکولس قابل ذکر ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT