Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / طلبہ کے مفاد کیلئے مدینہ گروپ کو تین ہفتوں کی راحت ، وقف بورڈ کا فیصلہ جائز : ہائی کورٹ

طلبہ کے مفاد کیلئے مدینہ گروپ کو تین ہفتوں کی راحت ، وقف بورڈ کا فیصلہ جائز : ہائی کورٹ

حیدرآباد /17 جنوری ( سیاست نیوز ) آندھراپردیش ہائی کورٹ نے مدینہ تعلیمی ادارہ کے انتظامیہ کو آج عبوری راحت دی اور آندھراپردیش ریاستی وقف بورڈ کو ہدایت کی کہ ان ادارہ جات کی روز مرہ کی سرگرمیوں میں آئندہ تین ہفتوں تک کوئی مداخلت نہ کی جائے ۔ ریاستی ہائی کورٹ کے جسٹس پی چندرا کمار آج دوپہر کے کھانہ کے وقفہ کے دوران مدینہ گروپ کے بانی کے

حیدرآباد /17 جنوری ( سیاست نیوز ) آندھراپردیش ہائی کورٹ نے مدینہ تعلیمی ادارہ کے انتظامیہ کو آج عبوری راحت دی اور آندھراپردیش ریاستی وقف بورڈ کو ہدایت کی کہ ان ادارہ جات کی روز مرہ کی سرگرمیوں میں آئندہ تین ہفتوں تک کوئی مداخلت نہ کی جائے ۔ ریاستی ہائی کورٹ کے جسٹس پی چندرا کمار آج دوپہر کے کھانہ کے وقفہ کے دوران مدینہ گروپ کے بانی کے ایم عارف الدین کی طرف سے دائرکردہ درخواست سے نمٹ رہے تھے جس میں ان ادارہ جات کو وقف بورڈ کے کنٹرول میں لینے کے خلاف چیالنج کیا گیا تھا۔ یہ دعوی بھی تھا کہ وقف اراضی پر کی گئی تعمیرات دستی پارچہ بافی حرمین شریفین کی مملوکہ ہیں ۔

عدالت العالیہ نے وقف جائیداد کو اپنی تحویل میں لینے وقف بورڈ کے احکام کو جائز قرار دیتے ہوئے درخواست گذار کو ہدایت کی کہ وہ جائیداد کی نوعیت میں کوئی تبدیلی نہ کرے ۔ معزز جج نے اس بات کی نشاندہی کی کہ وقف بورڈ نے ان ادارہ جات کے انتظامیہ کو اپنے تحت لینے کیلئے علیحدہ احکام جاری نہیں کئے ہیں ۔ چنانچہ بورڈ کو چاہئے کہ وہ طلبہ کے مفادات کی خاطر تین ہفتوں کی مدت تک ان تعلیمی اداروں کے روز مرہ کے امور میں مداخلت نہ کرے ۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ وقف بورڈ نے چہارشنبہ کو بیت المدینہ ( نامپلی ) ، مدینہ منڈل ( حمایت نگر ) ، مدینہ محل حیدرگوڑہ اور وٹھل واڑی میں 10 دوکانات کے علاوہ مدینہ والا دلاور گنج منگل ہاٹ کو اپنے کنٹرول میں لے لیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT