Thursday , January 18 2018
Home / شہر کی خبریں / طوفان ہدہد کے خطرہ سے نمٹنے آندھراپردیش چوکس

طوفان ہدہد کے خطرہ سے نمٹنے آندھراپردیش چوکس

فوج اور فضائیہ بھی تیار، این ڈی آر ایف کی ٹیمیں پہونچ گئیں، کل شدید بارش کا امکان

فوج اور فضائیہ بھی تیار، این ڈی آر ایف کی ٹیمیں پہونچ گئیں، کل شدید بارش کا امکان
حیدرآباد 9 اکٹوبر (سیاست نیوز) آندھراپردیش میں طوفان ہد ہد کے خطرہ سے نمٹنے کیلئے چوکسی اختیار کرلی گئی ہے۔ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ٹیمیں یہاں پہونچنا شروع ہوگئی ہیں جبکہ فوج اور فضائیہ نے بھی ریاست کی ہر ممکنہ مدد کرنے کی پیشکش کی ہے تاکہ طوفان ہدہد لاحق خطرہ سے نمٹا جاسکے۔ یہ طوفان ہدہد آندھراپردیش کے ساحلی اضلاع میں سرگرم ہوگیا ہے جہاں نظم و نسق نے چوکسی اختیار کرلی ہے۔ چیف منسٹر چندرابابو نائیڈو نے کہاکہ مرکز کی جانب سے قومی ڈیزاسٹر ریسپانس فورس کی 4 ٹیمیں روانہ کی گئی ہیں۔ اِن میں سے دو ٹیمیں پہلے ہی پہونچ چکی ہیں۔ فوج اور فضائیہ نے بھی ریاست کی مدد کی پیشکش کی ہے۔ طوفان ہدہد 12 اکٹوبر کی دوپہر تک آندھرا کے ساحل کو عبور کرلے گا۔ وشاکھاپٹنم سے ٹکراتے ہوئے گزر جائے گا۔ چندرابابو نائیڈو نے ساحلی اضلاع کے عہدیداروں کو ہدایت دی ہے کہ وہ بچاؤ اور راحت کاری خدمات انجام دینے کے لئے تیار رہیں۔ عہدیداروں کے ساتھ کی گئی کانفرنس میں اُنھوں نے ڈیزاسٹر مینجمنٹ ریاست کی تیاری کا جائزہ لیا۔ کلکٹروں اور عہدیداروں سے کہاکہ طوفان سے متاثرہ عوام کے لئے راحت کیمپس قائم کریں اور جن علاقوں میں طوفان کے خطرات کا سامنا ہے وہاں سے عوام کا تخلیہ کرایا جائے اور ضروری اشیاء کا انتظام کیا جائے۔ محکمہ موسمیات نے پیش قیاسی کی ہے کہ ساحلی آندھرا میں 50 تا 60 کیلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں چلیں گی۔ چیف سکریٹری آئی وائی آر کرشنا راؤ نے کہاکہ ریاستی حکومت کے ملازمین کی رخصتیں منسوخ کردی گئی ہیں۔ سینئر آئی اے ایس عہدیدار اروند کمار کو وشاکھاپٹنم روانہ کیا گیا ہے تاکہ طوفان کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے بچاؤ کاری اقدامات کی نگرانی کرسکیں۔ اِسی دوران چیف منسٹر مسٹر نائیڈو نے کل اپنے دورہ ضلع سریکاکلم کو منسوخ کردیا ہے۔ آندھراپردیش کے ساحلی اضلاع وشاکھاپٹنم اور سریکاکلم طوفان کی زد میں ہیں۔ اِسی دوران ڈپٹی چیف منسٹر این چنا راجپا نے بھی ضلع مشرقی گوداوری میں تیاریوں کا جائزہ لیا۔

TOPPOPULARRECENT