Sunday , June 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / عادل آباد میں آزادانہ و پرامن انتخابات

عادل آباد میں آزادانہ و پرامن انتخابات

ضلع میں زیڈ پی ٹی سی و ایم پی ٹی سی کیلئے تقریباً 70 فیصد رائے دہی

ضلع میں زیڈ پی ٹی سی و ایم پی ٹی سی کیلئے تقریباً 70 فیصد رائے دہی

عادل آباد /8 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) ضلع عادل آباد کے 52 کے منجملہ 21 منڈل جات جن کا شمار آصف آباد ، منچریال ڈیویژن میں کیا جاتا ہے جہاں پرامن اور بالکل آزادانہ طور پر رائے دہندوں نے اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کیا ۔ ضلع پرجا پریشد کے تحت زیڈ پی ٹی سی ایم پی ٹی سی انتخابات کے پہلے مرحلے کی رائے دہی کے موقع پر آصف آباد ڈیویژن کے بیشتر مراکز رائے دہی پر مقررہ وقت سے زائد از دو گھنٹہ تک رائے دہندوں نے اپنے ووٹ کا استعمال کیا ۔ شدید دھوپ کے بناء پر دوپہر کے اوقات میں رائے دہندوں کی کمی کو محسوس کیا گیا جبکہ شام کے اوقات میں طویل قطار میں مرد خواتین حق رائے دہی سے استفادہ کرنے مراکز رائے دہی پر موجود تھے ۔ مقررہ وقت کے تحت مراکز رائے دہی پر پہونچنے والے افراد کو شام سات بجے تک استفادہ کرنے کی سہولت فراہم کی گئی تھی ۔ منچریال ، آصف آباد ڈیویژن میں 70 فیصد رائے دہی کا شمار کیا گیا ۔ 21 زیڈ پی ٹی سی کیلئے مختلف سیاسی جماعتوں کے 110 امیدواروں نے حصہ لیا ۔ منچریال ، ڈنڈے پلی ، جئے پور ، جنارم ، کاسی پیٹ ، کوٹاپلی ،لکشٹی پیٹ ، مندامری ، نینلہ ، ویمن پلی ، منڈل جات کیلئے 524 مراکز رائے دہی جبکہ آصف آباد ، بیجور ، بھیمنی ، دہے گاؤں ، کاغذنگر ، کوٹھالہ ، رپینا سرپور ٹی ، بیلم پلی ، تانڈور منڈل جات میں 315 مراکز رائے دہی قائم کئے گئے تھے ۔ آصف آباد اور منچریال ڈیویژن کے 21 منڈل جات میں 263 ایم پی ٹی سی جائیدادیں پائی جاتی ہیں جن میں 326699 مرد 324291 خاتون ووٹرس شامل ہیں ۔ ماوسٹوں سے متاثرہ 77 مراکز رائے دہی کے علاوہ 163 شدید حساس اور 289 حساس مراکز رائے دہی کی نشاندہی کرتے ہوئے حیدرآباد سے گرے ہانڈس پولیس ٹیم کے 200 جوانوں کو ضلع کی سرحد جو مہاراشٹرا سے منسلک ہے پر کڑی نظر رکھنے متعین کیا گیا تھا ۔ آصف آباد کا انٹی گریٹیڈ ہاسٹل جہاں بیالٹ باکس رکھنے کی غرض اسٹرانگ روم بنایا گیا جس کا ضلع کلکٹر مسٹر احمد بابو نے معائنہ کیا اور مختلف مراکز رائے دہی پر پہونچ کر بھی تفصیلات حاصل کئے ۔ رائے دہندگان بیالٹ پیپر کے تحت دو ووٹ کا استعمال کر رہے تھے جن میں ایک زیڈ پی ٹی سی اور ایک ایم پی ٹی سی کے حق میں استعمال کیا گیا ۔ 263 ایم پی ٹی سی کیلئے 1144 امیدواروں نے انتخابات میں حصہ لیا ۔

TOPPOPULARRECENT