Saturday , June 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / عادل آباد میں سولار پاور پلانٹ کے قیام کیلئے مساعی

عادل آباد میں سولار پاور پلانٹ کے قیام کیلئے مساعی

این ٹی پی سی کی آٹھ رکنی ٹیم کی جانب سے اراضی کی تلاش جاری

این ٹی پی سی کی آٹھ رکنی ٹیم کی جانب سے اراضی کی تلاش جاری

اوٹنور 5 ڈسمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع عادل آباد میں مستقبل قریب میں سولار پاور پلانٹ کا قیام ممکن ہے۔ اگر اس کے لئے نیشنل تھرمل پاور کارپوریشن (این ٹی پی سی) لمیٹیڈ درکار اقدامات کارپوریشن آف انڈیا کی مدد سے قائم ہوگا۔ مجوزہ سولار پاور اسٹیشن کے لئے ضلع میں موزوں مقام کی تلاش جاری ہے۔ اس سلسلہ میں این ٹی پی سی لمیٹیڈ کی ایک 8 رکنی ٹیم جس کی قیادت چیف انجینئر مسٹر رایچ این ستیا نارائنا کررہے ہیں عادل آباد پہنچی اور ضلع کے 3 مقامات موالا گرام پنچایت، پیپل دھاری موضع کے علاوہ اندراویلی منڈل کے موضع گٹے پلی کا تفصیلی معائنہ کیا۔ اس سلسلہ میں ٹیم کے ارکان بیجور منڈل کے موضع ایلکاپلی کا بھی دورہ کریں گے۔ مجوزہ پراجکٹ کے قیام کی جگہ کی فراہمی کے لئے تلنگانہ اسٹیٹ انڈسٹریل انفراسٹرکچر کارپوریشن (ٹی ایس آئی آئی سی) تعاون کررہی ہے۔ کمپنی کے عہدیدار درکار اراضی کا حصول اور اس سلسلہ میں اخراجات کا مختلف زاویوں سے جائزہ لے رہے ہیں۔ معائنہ کاروں میں شامل مسٹر ڈی ونئے کمار نے کہاکہ سولار پاور پلانٹ کے لئے ایسی اراضی کا انتخاب کیا جائے گا جوکہ صنعتی اعتبار سے موزوں ہو، اس کے لئے ضرورت پڑنے پر مالکین کو معاوضہ ادا کرتے ہوئے ان سے اراضی حاصل کی جائے گی۔ ٹی ایس آئی آئی سی کے ڈپٹی ڈائرکٹر نے کہاکہ اس سلسلہ میں محفوظ جنگلات کو متاثر نہیں کیا جائے گا۔ اسی مقام پر پراجکٹ قائم کیا جائے گا جوکہ سرکاری احکام کے مطابق عہدیداران کے حوالے کریں گے۔ موالا میں محکمہ جنگلات کے عہدیداروں نے سروے نمبر 135 کے تحت واقع غیر جنگلاتی تقریباً 2,869 اراضی کا مشاہدہ کیا جوکہ سولار پاور کی تیاری کے لئے موزوں ہے۔ پیپل دھاری میں سروے نمبر 12 کے تحت 3,83 ایکر اراضی دستیاب ہے جو پہاڑیوں سے گھری ہوئی ہے۔ اس طرح گٹے پلی میں سروے نمبر 12 کے تحت ایک پہاڑی پر 1,87 ایکر اراضی موجود ہے۔ مہرین نے بتایا کہ سولار پاور پلانٹ کے قیام کے بعد زیادہ سے زیادہ برقی پیداوار کے لئے موزوں جگہ کا انتخاب ماہرین کے زیرغور ہے۔

TOPPOPULARRECENT