Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / عازمین حج کو وداع کرنے کی روایت سے چندرا بابو کا انحراف

عازمین حج کو وداع کرنے کی روایت سے چندرا بابو کا انحراف

چیف منسٹر اے پی کے کیمپ آفس پر عازمین کی طلبی ، حیدرآباد پہونچنے تک عازمین کی حالت زار
حیدرآباد۔18 اگست (سیاست نیوز) آندھراپردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے حج ہائوز پہنچ کر آندھراپردیش کے عازمین کو وداع کرنے کی روایت سے انحراف کرتے ہوئے عازمین کو خود اپنے کیمپ آفس طلب کرلیا۔ اس طرح کرشنا اور گنٹور اضلاع سے تعلق رکھنے والے عازمین کو دو گھنٹے سے زائد تک انتظار کی زحمت اٹھانی پڑی۔ بتایا جاتا ہے کہ آندھراپردیش حج کمیٹی نے جب چندرا بابو نائیڈو سے عازمین کے قافلے کو وداع کرنے کی روایت سے واقف کروایا تو انہوں نے بعض ناگزیر مصروفیات کے سبب عازمین کو خود ان کے دفتر تک لانے کی ہدایت دی۔ حج کمیٹی نے کرشنا اور گنٹور کے عازمین پر مشتمل دو بسوں کو وجئے واڑہ میں چیف منسٹر کے کیمپ آفس منتقل کیا جہاں انہیں دو گھنٹے سے زائد تک چیف منسٹر کی آمد کا انتظار کرنا پڑا۔ سکیوریٹی عملے نے عازمین کو بسوں سے اترنے کی اجازت نہیں دی جس کے باعث وہ بسوں میں عملاً محروس ہوکر رہ گئے تھے۔ بعد میں چندرا بابو نائیڈو نے دونوں بسوں کو جھنڈی دکھائی اور بس میں سوار ہوکر عازمین سے ملاقات کی اور دعا کی اپیل کی۔ دونوں بس کے عازمین جب حج ہائوز نامپلی پہنچے تو انہوں نے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے تفصیلات بیان کیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہر ریاست میں چیف منسٹر یا ان کا نمائندہ خود عازمین حج کے پاس پہنچ کر وداع کرتے ہیں لیکن چندرا بابو نائیڈو نے عازمین کو خود اپنے دفتر طلب کرتے ہوئے زحمت دی ہے۔ عازمین نے کہا کہ دونوں بسوں میں کئی ضعیف افراد تھے جنہیں طویل انتظار کے سبب مشکلات پیش آئیں۔ اس سلسلہ میں جب صدر آندھراپردیش حج کمیٹی مومن احمد حسین نے ربط قائم کیا گیا تو انہوں نے تاخیر کا اعتراف کیا اور کہا کہ ایک بیرونی وفد سے ملاقات کے سبب چندرا بابو نائیڈو کو قافلے روانہ کرنے میں دیر ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد پہنچنے کے امکانات نہ ہونے کے سبب دو بسوں کو چیف منسٹر کے دفتر لے جایا گیا۔ نامپلی حج ہائوز سے آندھراپردیش کے عازمین کے پہلے قافلے کو آندھراپردیش کے وزیر سماجی بھلائی آنند بابو ہفتے کے دن وداع کریں گے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT