Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / عازمین حج کی روانگی کے شیڈول کا اعلان، 2 ستمبر سے آغاز ہوگا

عازمین حج کی روانگی کے شیڈول کا اعلان، 2 ستمبر سے آغاز ہوگا

ایرانڈیا فلائیٹ سے روانگی کے انتظامات، اندرون سات یوم شیڈول مکمل : پروفیسر ایس اے شکور
حیدرآباد۔/25جولائی، ( سیاست نیوز) حج 2015کیلئے تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے عازمین کی روانگی کے شیڈول کا اعلان کردیا گیا ہے۔ ایر انڈیا کی جانب سے جاری کردہ شیڈول کے مطابق عازمین حج کی روانگی کا 2ستمبر سے آغاز ہوگا اور 8ستمبر تک روانگی کا عمل مکمل کرلیا جائے گا۔ 7دن میں عازمین حج کی 16فلائیٹس جدہ سعودی عرب روانہ ہوں گی۔ یہ پہلا موقع ہے جبکہ عازمین حج کی روانگی کا شیڈول سات دن میں مکمل کیا جارہا ہے اور چار دن میں فی یوم تین پروازوں کے اعتبار سے 12 فلائیٹس روانہ ہوں گی جبکہ ایک دن دو پروازیں ہوں گی اور مابقی دو دنوں میں ایک، ایک فلائیٹ روانہ ہوگی۔ جاریہ سال عازمین حج ایر انڈیا کی فلائیٹس سے روانہ ہوں گے۔ اس طرح عازمین حج کیلئے کئی برسوں بعد سعودی ایر لائنس کے بجائے ایر انڈیا سے روانگی کا تجربہ ہوگا۔ ایر انڈیا کے اعلیٰ عہدیداروں نے آج حج ہاوز پہنچ کر اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور سے ملاقات کی اور حج فلائیٹس کا شیڈول حوالے کیا۔ انہوں نے حج ہاوز میں حج کیمپ کے انتظامات کا بھی جائزہ لیا۔ سنٹرل حج کمیٹی ایر انڈیا کے جاری کردہ حج شیڈول کے مطابق تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے عازمین کیلئے پروازوں کا علحدہ شیڈول جاری کرے گی۔ پروگرام کے مطابق 2، 3، 5 اور 6ستمبر کو یومیہ تین پروازیں ہوں گی جبکہ 4ستمبر کو 2فلائیٹس روانہ ہوں گی۔ 7اور 8ستمبر کو ایک، ایک فلائیٹ روانہ ہوگی۔ اسی طرح 14اکٹوبر سے واپسی کا عمل شروع ہوگا اور آخری فلائیٹ 20اکٹوبر کو واپس ہوگی۔ اس طرح سات دن میں 16فلائیٹس مدینہ منورہ سے حیدرآباد واپس ہوں گی۔ ایر انڈیا کی ہر فلائیٹ میں 340 عازمین کی گنجائش رہے گی۔ ایر انڈیا کے ایر پورٹ منیجر بی اے کشور، اسسٹنٹ جنرل منیجر کمرشیل ٹی رگھو بابو اور منیجر کمرشیل وی ویویکانندا نے پروفیسر ایس اے شکور سے حج کیمپ کے انتظامات پر بات چیت کی۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی نے ایر انڈیا کے حکام سے کہا کہ سعودی ایر لائنس کی خدمات کی طرح بہتر سے بہتر سہولتیں فراہم کی جائیں۔ ایر انڈیا کے حکام نے کہا کہ عازمین کیلئے ایر انڈیا تمام تر سہولتیں فراہم کرے گا اور شکایت کی کوئی گنجائش نہیں رہے گی خاص طور پر فلائیٹس کی روانگی اور واپسی کے اوقات کی پابندی کی جائے گی۔ انہوں نے زم زم کو عازمین کی واپسی سے قبل ہی حیدرآباد منتقل کرنے اور ایر پورٹ پر محفوظ کرانے سے اتفاق کرلیا۔ حکام نے کہا کہ عازمین کے بیاگیجس کی گمشدگی یا ایرپورٹ پر چھوٹ جانے جیسے واقعات کا تدارک کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ فلائیٹ کی روانگی اور واپسی کے اوقات حیدرآباد انٹرنیشنل ایرپورٹ کے حج ٹرمنل کے باہر ڈسپلے کئے جائیں گے۔ اگر عازمین کی روانگی کے اوقات میں کھانے کا وقت آجائے تو انہیں ایرانڈیا کھانا فراہم کرے گا۔ ایر انڈیا کے حکام نے حج ہاوز میں ان حصوں کا معائنہ کیا جہاں حج کیمپ میں مختلف محکمہ جات کے شعبے قائم کئے جاتے ہیں۔ واضح رہے کہ پہلی مرتبہ اس قدر کم مدت میں حج فلائیٹس کی روانگی کے پروگرام کے سبب حج ہاوز میں انتظامات حج کمیٹی کیلئے چیلنج سے کم نہیں۔ حج ہاوز میں تقریباً 900 عازمین کے قیام کی گنجائش ہے اور ایک دن میں تین فلائیٹس کے سبب عازمین کی کثیر تعداد حج ہاوز میں موجود رہے گی۔ اضلاع سے تعلق رکھنے والے عازمین 48گھنٹے پہلے ہی رپورٹ کریں گے۔ حج کمیٹی نے حج کیمپ کے آغاز سے قبل حج ہاوز میں موجود خانگی اداروں کے دفاتر کے تخلیہ کی کارروائی شروع کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT