Tuesday , June 19 2018
Home / شہر کی خبریں / عالمی تلگو کانفرنس میں این ٹی راما راؤ کو نظرانداز کرنے پر تنقید

عالمی تلگو کانفرنس میں این ٹی راما راؤ کو نظرانداز کرنے پر تنقید

سابق چیف منسٹر کی خدمات کو فراموش کرنا افسوسناک ، تلگودیشم
حیدرآباد ۔ /18 ڈسمبر (سیاست نیوز) تلگودیشم پارٹی نے حیدرآباد میں منعقدہ عالمی تلگو کانفرنس میں بانی تلگودیشم پارٹی و سابق چیف منسٹر متحدہ آندھراپردیش آنجہانی این ٹی راما راؤ کو نظرانداز کردینے پر چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ کو ہدف ملامت بنایا اور کہا کہ آنجہانی این ٹی راما راؤ کو فراموش کردینا انتہائی تکلیف دہ اور افسوسناک بات ہے ۔ جبکہ نہ صرف کے چندر شیکھر راؤ کو بلکہ کئی افراد کو آنجہانی این ٹی راما راؤ نے ہی سیاسی زندگی دی تھی لیکن عالمی تلگو کانفرنس میں ان کو ہی مکمل طور پر نظرانداز کردینا چندر شیکھر راؤ کی آمرانہ و نچلی سطح کی حرکت کے سوا کچھ نہیں ہے ۔ اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے رکن پولیٹ بیورو تلگودیشم و سابق وزیر ایم نرسمہلو نے یہ بات کہی اور بتایا کہ اگر آنجہانی این ٹی راما راؤ انہیں سال 1983 میں سیاسی زندگی نہ دیتے تو خود چندرا شیکھر راؤ کا کوئی سیاسی وجود نہیں رہتا تھا اور آج و چیف منسٹر کے عہدے پر فائز نہیں رہ سکتے تھے ۔ انہوں نے تعلیم دیتے ہوئے استاذ کا احترام کرنے والے چندر شیکھرر راؤ سے دریافت کیا کہ آیا انہیں سیاسی زندگی دینے والے سیاسی گرو کا احترام کرنا ان کی ذمہ داری نہیں ہے ؟ مسٹر نرسمہلو نے کہا کہ عالمی تلگو کانفرنس میں این ٹی راما راؤ کو نظرانداز کردیئے جانے پر دنیا بھر کے تلگو عوام انتہائی دکھ و تکلیف کا اظہار کررہے ہیں اور بتایا کہ وہ دن دور نہیں ہیں کہ یہی تلگو عوام چندر شیکھر راؤ کو جلد فراموش کردیں گے ۔ انہوں نے بانی ایم آر پی ایس مندا کرشنا مادیگا کو گرفتار کرنے کی مذمت کی اور کہا کہ ایس سی طبقہ کی زمرہ بندی کے مسئلہ کو مزید لیت و لعل میں ڈالنا مناسب بات نہیں ہے ۔ انہوں نے چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ پر الزام عائد کیا کہ وہ ایس سی طبقات کو چھوٹی نظر سے دیکھ رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT