Saturday , June 23 2018
Home / سیاسیات / عام آدمی پارٹی اور کانگریس کو انکم ٹیکس نوٹسیں

عام آدمی پارٹی اور کانگریس کو انکم ٹیکس نوٹسیں

نئی دہلی ۔ 11 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی جو 2 کروڑ روپئے کے عطیہ کے سلسلہ میں تنازعہ کا شکار ہوگئی ہے کیونکہ اس نے مبینہ طور پر شیل کمپنیوں سے چیکس حاصل کئے تھے، آج محکمہ انکم ٹیکس نے اسے اور کانگریس کو نوٹسیں جاری کردیں جبکہ دیگر 48 اداروں کو زیرنگرانی رکھا گیا ہے۔ نوٹسیں 9 فبروری کو جاری کی گئی ہیں جو دہلی اسمبلی انتخابات سے

نئی دہلی ۔ 11 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی جو 2 کروڑ روپئے کے عطیہ کے سلسلہ میں تنازعہ کا شکار ہوگئی ہے کیونکہ اس نے مبینہ طور پر شیل کمپنیوں سے چیکس حاصل کئے تھے، آج محکمہ انکم ٹیکس نے اسے اور کانگریس کو نوٹسیں جاری کردیں جبکہ دیگر 48 اداروں کو زیرنگرانی رکھا گیا ہے۔ نوٹسیں 9 فبروری کو جاری کی گئی ہیں جو دہلی اسمبلی انتخابات سے ایک دن پہلے کی تاریخ ہے۔ بعدازاں انتخابی نتائج میں عام آدمی پارٹی نے دیگر تمام سیاسی پارٹیوں کا صفایہ کردیا۔ سی بی ڈی ٹی نے آج ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی پارٹیوں یا اداروں کے ناموں کا انکشاف نہیں کیا گیا۔ عام آدمی پارٹی اور دیگر نے عطیہ دہندگان کی شناخت دریافت کی ہے اور دیگر ضروری تفصیلات بھی دریافت کی ہیں تاکہ تحقیقات مکمل کی جاسکیں۔ بی جے پی نے عام آدمی پارٹی کے خلاف اے وی اے ایم کے ذریعہ شدت کی مہم چلائی تھی جو عام آدمی پارٹی سے منحرف گروپ ہے۔ اس نے دعویٰ کیا تھا کہ کجریوال نے شیل کمپنیوں سے فی کس 50 لاکھ روپئے بطور عطیہ حاصل کئے ہیں۔ یہ عطیے گذشتہ سال 15 اپریل کو نصف شب کے وقت حاصل کئے گئے تھے۔ اسی وقت سے عام آدمی پارٹی کہہ رہی ہیکہ نفاذ قانون ادارے اس کے خلاف تحقیقات کرسکتے ہیں۔ نوٹس کی وصولی کی توثیق کرتے ہوئے پارٹی ترجمان اتیشی میرینا نے کہا کہ نوٹس پارٹی کے پٹیل نگر دفتر کو روانہ کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نفاذ قانون ادارے چاہیں تو اس بارے میں ایس آئی ٹی کے ذریعہ تحقیقات کرواسکتے ہیں۔ کانگریس کے ترجمان نے کہا کہ محکمہ انکم ٹیکس سی بی ڈی ٹی کے تحت ہے وہ وزارت فینانس کی ماتحت ہے۔

TOPPOPULARRECENT