Monday , December 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / عام انتخابات 2019 سے قبل سیاسی اتھل پتھل

عام انتخابات 2019 سے قبل سیاسی اتھل پتھل

سیاسی بقاء کیلئے قائدین فکر مند، تلگودیشم شدید بحران سے دوچار
کریم نگر۔/20اکٹوبر، (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) قدیم ضلع کریم نگر کو ایک زمانہ میں تلگودیشم کا مضبوط قلعہ کہا جاتا تھا۔ لیکن اب اس میں دراڑ پڑچکی ہے، انتہائی برا حال ہوچکا ہے۔ 2019 کے چناؤ قدیم ضلع سے کریم نگر سے ٹی ڈی پی تاریخ کا ایک گمنام باب بن کر رہ جائے گی۔ کہا جارہا ہے کہ تلگودیشم کے اہم قائدین برسر اقتدار پارٹی میں جاچکے ہیں اور عہدے بھی حاصل کرلئے ہیں۔ اب جو بچے ہوتے ہیں انہیں عوام کی فلاح و بہبود سے زیادہ اپنی سیاسی بقاء کی فکر ہے۔ ٹی ڈی پی کے ریاستی صدر ایل رمنا فی الحال ضلع کی نمائندہ شخصیت ہیں جو کہ تلگودیشم دور میں ایم ایل اے، ایم پی، وزیر کی خدمات انجام دے چکے ہیں۔ اب ان کی قیادت کمزور ہوچکی ہے۔ ان ہی کے آبائی ضلع قدیم کریم نگر کے تلگودیشم پارٹی میں ناامیدی مایوسی پھیل چکی ہے۔ پچھلے کچھ عرصہ سے کانگریس اور بی جے پی کی جانب سے اہم ٹی ڈی پی قائدین کو شرکت کی دعوت دی جارہی ہے چنانچہ تلگودیشم کے ورکنگ پریسیڈنٹ ریونت ریڈی بروز منگل دہلی میں راہول گاندھی سے ملنے کی خبر ملی ہے اور یہ بھی افواہیں پھیل گئی ہیں کہ ریونت ریڈی کے ساتھ سابق رکن اسمبلی چنتہ کنٹہ وجئے رمنا راؤ ، پیدا پلی اور چیہ ڈنڈی حلقہ اسمبلی انچارج میڑیلی ستیم بھی کانگریس میں خصوصی مقام دیئے جانے کے معاہدے کے تحت شرکت کرنے والے ہیں۔ وجئے رمنا راؤ اور میڑیلی ستیم کوچناؤ ٹکٹ دیئے جانے کا تیقن دیا گیا ہے ۔ حالانکہ یہ خبر پھیل گئی تھی کہ وجئے رمنا راؤ ٹی آر ایس میں شرکت کرنے والے ہیں۔ قبل ازیں سریدھر بابو نے وجئے رمنا راؤ کو کانگریس میں شرکت کی ترغیب دی تھی۔ اب وجئے رمنا راؤ کے ساتھ سرسلہ اسمبلی حلقہ انچارج نرسنگا راؤ، حضور آباد کے مدوکیوشپ ریڈی کورٹلہ انچارج ایس پربھاکر ، منتھنی انچارج ناگیا، حسن آباد کے انچارج رویندر راو، جی راملو یادو، ملیشم، پی سریندر، جی رمیش بھی پارٹی بدلنے کیلئے تیاری کرلی ہے کہا جارہا ہے۔ کچھ بھی ہو اب کریم نگر میں تلگودیشم کا مستقبل مخدوش ہوچکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT