Tuesday , January 16 2018
Home / سیاسیات / عام آدمی پارٹی کے رجسٹریشن کی منسوخی سے انکار

عام آدمی پارٹی کے رجسٹریشن کی منسوخی سے انکار

نئی دہلی۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) دہلی ہائی کورٹ نے آج ایک عرضی مسترد کردیا ہے جس میں الیکشن کمیشن آف انڈیا کو یہ ہدایت دینے کی استدعا کی گئی ہے کہ فرضی دستاویز استعمال کرنے پر عام آدمی پارٹی کا رجسٹریشن منسوخ کردیا جائے۔ چیف جسٹس جی روہن اور جسٹس آر ایس انڈلار پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے یہ عرضی مسترد کردی۔ جبکہ درخواست گزار نہیش راج

نئی دہلی۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) دہلی ہائی کورٹ نے آج ایک عرضی مسترد کردیا ہے جس میں الیکشن کمیشن آف انڈیا کو یہ ہدایت دینے کی استدعا کی گئی ہے کہ فرضی دستاویز استعمال کرنے پر عام آدمی پارٹی کا رجسٹریشن منسوخ کردیا جائے۔ چیف جسٹس جی روہن اور جسٹس آر ایس انڈلار پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے یہ عرضی مسترد کردی۔ جبکہ درخواست گزار نہیش راج جین نے یہ الزام عائد کیا تھا کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا نے عام آدمی پارٹی کی فرضی دستاویزات کی مناسب طریقہ سے تحقیقات کئے بغیر ہی عجلت پسندی میں پارٹی کا رجسٹریشن کردیا۔ انہوں نے یہ ادعا کیا کہ عام آدمی پارٹی کے لیڈروں نے حلفناموں میں اپنا اتہ پتہ (ایڈریس) بھی غلط پیش کیا کیوں کہ یہ ووٹر شناختی کارڈ اور انکم ٹیکس ریٹرنس میں دیئے گئے رہائشی تفصیلات سے ہم آہنگ نہیں ہے۔ جبکہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کا یہ استدلال تھا کہ عام آدمی پارٹی کو مسلمہ حیثیت دینے میں کوئی کوتاہی یا جلد بازی نہیں کی گئی ہے اور مطلوبہ ضابطوں کی تکمیل کے بعد پارٹی کا رجسٹریشن کیا گیا ہے الیکشن کمیشن نے ہائی کورٹ سے گزارش کی کہ مذکورہ عرضی کو مسترد کردیا جائے کیوں کہ قانون ایک مسلمہ پارٹی کے رجسٹریشن کو منسوخ کرنے کی اجازت نہیں دیتا ہے۔ عدالت نے فریقوں کے دلائل کی سماعت کے بعد اپنے فیصلہ کو 18 فروری کے دن محفوظ کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT