Thursday , June 21 2018
Home / سیاسیات / عاپ سے پرشانت بھوشن اور یوگیندریادوکا اخراج متوقع

عاپ سے پرشانت بھوشن اور یوگیندریادوکا اخراج متوقع

نئی دہلی ۔ 11 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پارٹی میں داخلی خلفشار اور کشمکش کے دوران عام آدمی پارٹی کے بعض ارکان اسمبلی نے مطالبہ کیا ہے کہ باپ بیٹے شانتی اور پرشانت بھوشن کو یوگیندر یادو کے ساتھ ان کی پار ٹی مخالف سرگرمیوں کی پاداش میں خارج کردیا جائے۔ ڈسپلن شکنی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا اصرار کرتے ہوئے پارٹی رکن اسمبلی کپل مصرا

نئی دہلی ۔ 11 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پارٹی میں داخلی خلفشار اور کشمکش کے دوران عام آدمی پارٹی کے بعض ارکان اسمبلی نے مطالبہ کیا ہے کہ باپ بیٹے شانتی اور پرشانت بھوشن کو یوگیندر یادو کے ساتھ ان کی پار ٹی مخالف سرگرمیوں کی پاداش میں خارج کردیا جائے۔ ڈسپلن شکنی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا اصرار کرتے ہوئے پارٹی رکن اسمبلی کپل مصرا نے آج اپنے ساتھیوں (عاپ ارکان اسمبلی) میں دستخطی مہم کا آغاز کردیا ہے تاکہ پارٹی کی تین بڑے لیڈروں کو باہر کا راستہ دکھایا جاسکے۔ کپل مصرا جو کہ حلقہ کروال نگر کے رکن اسمبلی ہیں، یہ دعویٰ کیا کہ 55 سے زائد ارکان اسمبلی نے عرضی پر دستخط کئے ہیں اور بتایا کہ جب اروند کجریوال بنگلور سے دہلی واپس ہوں گے ، ارکان اسمبلی کے دستخطوں پر مشتمل محضر نامہ انہیں حوالے کردیا جائیگا۔

میں نے تمام ارکان اسمبلی سے بات چیت کی ہے جنہوں نے محضر نامہ پر دستخط سے اتفاق کرلیا جبکہ اروند کجریوال ان دنوں میں اپنے علاج کیلئے بنگلور میں قیام پذیر ہیں۔ عام آدمی پارٹی کے ار کان اسمبلی نریش یادو ، ادرش شاستری، پروین کمار ، سریندر سنگھ اور سابق وزیر گریش سونی اور دیگر نے آج ملاقات کر کے عرضی پر دستخط کردیئے ہیں۔ تاہم جن ارکان اسمبلی نے ہنوز دستخط نہیں کئے ہیں ، ان میں کرنل دیویندر شراوت ، پنکج پشکر شامل ہیں۔ مسٹر شراوت نے سوال کیا کہ کسی شخص کو ایک ہی جرم کی سزا دو بار کیوں دی جائے جبکہ انہیں (شانتی ۔ پرشانت) پہلے ہی سیاسی امور کمیٹی سے ہٹادیا گیا ہے اور پارٹی سے اخراج کا مطالبہ فطری انصاف کے مغائر ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پارٹی نے محضر نامہ پر دستخط کیلئے کوئی وہپ جاری نہیں کیا ہے ۔ میں نہیں چاہتا کہ پارٹی میں پھوٹ پڑ جائے اور تفرقہ پرست طاقتوں سے زیادہ اتحاد کی قوتیں مضبوط ہیں۔ تاہم کئی ایک کوششوں کے باوجود پشکر سے ربط قائم نہیں ہوسکا جو کہ یادو اور بھوشن کے قریبی تصور کئے جاتے ہیں۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ جاریہ ماہ کے اواخر میں عاپ نیشنل کونسل اجلاس کے پیش نظر اروند کجریوال کا کیمپ بھوشن اور یادو کے خلاف مہم میں شدت پیدا کردی ہے ۔ ارکان اسمبلی کا یہ اقدام ، حالیہ دہلی اسمبلی کے انتخابات میں پار ٹی کی شکست کیلئے مذکورہ تینوں لیڈروں پر الزام عائد کئے جانے کے بعد سامنے آیا ہے جنہوں نے (بھوشن اور یادو) پارٹی والینٹرس کو انتخابی مہم کیلئے دہلی نہ آنے اور پارٹی کو فنڈس نہ دینے کی ہدایت دی تھی تاکہ انتخابات میں کامیابی امکانات کو متاثر کیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT