Saturday , July 21 2018
Home / سیاسیات / عاپ کی نوٹس وجہ نمائی ایک مذاق : یوگیندر یادو

عاپ کی نوٹس وجہ نمائی ایک مذاق : یوگیندر یادو

نئی دہلی 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی سے یقینی اخراج کا سامنا کررہے باغی لیڈر یوگیندر یادو نے نوٹس وجہ نمائی پر پارٹی کو شدید تنقیدوں کا نشانہ بنایا اور اسے ایک مذاق قرار دیا۔ اُنھوں نے سوشیل میڈیا پر یہ سوال بھی کیاکہ نوٹس وجہ نمائی اُنھیں موصول ہونے سے پہلے میڈیا کو تفصیلات کا علم کس طرح ہوا۔ اُنھوں نے تادیبی کمیٹی ارکا

نئی دہلی 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی سے یقینی اخراج کا سامنا کررہے باغی لیڈر یوگیندر یادو نے نوٹس وجہ نمائی پر پارٹی کو شدید تنقیدوں کا نشانہ بنایا اور اسے ایک مذاق قرار دیا۔ اُنھوں نے سوشیل میڈیا پر یہ سوال بھی کیاکہ نوٹس وجہ نمائی اُنھیں موصول ہونے سے پہلے میڈیا کو تفصیلات کا علم کس طرح ہوا۔ اُنھوں نے تادیبی کمیٹی ارکان پر اِس نوٹس کے افشاء کا الزام عائد کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ قومی تادیبی کمیٹی اپنے صدرنشین دنیش واگھیلا کو تاریکی میں رکھتے ہوئے یہ نوٹس کس طرح جاری کرسکتی ہے۔ اُنھوں نے واگھیلا سے ٹیلیفون پر گفتگو کا دعویٰ کیا جنھوں نے بتایا کہ وہ دہلی میں نہیں ہیں اور پیانل نے اِس معاملہ میں ہنوز کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔ یوگیندر یادو نے کہاکہ کل شام اُنھوں نے واگھیلا سے بات کی اور وہ نوٹس وجہ نمائی کے بارے میں لاعلم تھے۔ لیکن ٹی وی اطلاعات میں اِس نوٹس کے بارے میں بتایا گیا۔ یوگیندر یادو نے سوشیل میڈیا پر کہاکہ واگھیلا نے اِس معاملہ کا جائزہ لیتے ہوئے انصاف کا وعدہ کیا تھا۔ اِس کے ساتھ ساتھ اُنھوں نے حساس معاملات کے افشاء کی تحقیقات کرتے ہوئے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ اُنھوں نے کہاکہ 10 بجے شب میڈیا کو تمام 4 مکتوبات کے متن کا پتہ چل گیا تھا۔ کیا کمیٹی کے کسی رکن نے اِس کا افشاء کیا ہے؟ 8 بجے شب میڈیا نے یہ اطلاع دی کہ نوٹس اُنھیں جاری کی جارہی ہے۔ یہ بھی بتایا کہ شخصی طور پر یہ نوٹس دی جائے گی۔ پہلے تو اُنھیں میڈیا کی اطلاع پر یقین نہیں ہوا۔ اِس کے بعد اُنھیں پتہ چلا کہ پروفیسر آنند کمار کی نوٹس اُن کے گھر پر پہونچا دی گئی ہے۔

اُنھوں نے کہاکہ آخر میڈیا کو ہر سرگرمی سے کون واقف کروایا رہا ہے؟ عام آدمی پارٹی نے باغی قائدین کے خلاف کارروائی کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے کل 4 سینئر لیڈرس یوگیندر یادو، پرشانت بھوشن، آنند کمار اور اجیت جھا کو نوٹس وجہ نمائی جاری کی تھی۔ اِنھیں پارٹی کی مختلف کمیٹیوں کے عہدوں سے پہلے ہی برطرف کیا جاچکا ہے۔ یوگیندر یادو نے کمیٹی کے دیگر ارکان بشمول آشیش کھیتان اور پنکج گپتا پر بھی تنقید کی اور کہاکہ کیا کبھی کسی نے شکایت کنندہ اور عینی شاہدین کے ججس بن جانے کے بارے میں سنا ہے؟ اُنھوں نے کہاکہ جس کمیٹی نے نوٹس جاری کی ہے اور اِس معاملہ کا فیصلہ کرے گی اِن میں پنکج گپتا بھی شال ہیں۔ یہ وہی پنکج گپتا ہیں جنھوں نے ایک تحریری دستخط شدہ بیان جاری کرتے ہوئے پرشانت بھوشن اور خود اُن (یوگیندر یادو) پر مخالف پارٹی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا تھا۔ وہ اب اِس الزام کی تحقیقات کریں گے۔ کمیٹی میں آشیش کھیتان بھی شامل ہیں جنھوں نے گزشتہ ماہ پرشانت بھوشن اور اُن کے خاندان کے خلاف توہین آمیز ریمارکس کئے تھے اور بعد میں اُنھیں معذرت خواہی کرنی پڑی تھی۔

TOPPOPULARRECENT