Tuesday , January 23 2018
Home / Top Stories / عاپ کے جلسہ میں کاشتکار کی خودکشی، کجریوال تنقید کا نشانہ

عاپ کے جلسہ میں کاشتکار کی خودکشی، کجریوال تنقید کا نشانہ

نئی دہلی ۔ 22 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) راجستھان کے ایک پریشان حال کاشتکار نے عاپ کے جلسہ عام میں چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال کی موجودگی میں برسرعام خودکشی کرلی لیکن جلسہ عام جاری رہا جس کی بناء پر اروند کجریوال ’’شدید بے حسی‘‘ کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بن گئے۔ اس واقعہ سے سیاسی حریفوں کے درمیان ایک دوسرے پر الزام تراشی کا سلسلہ شروع ہ

نئی دہلی ۔ 22 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) راجستھان کے ایک پریشان حال کاشتکار نے عاپ کے جلسہ عام میں چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال کی موجودگی میں برسرعام خودکشی کرلی لیکن جلسہ عام جاری رہا جس کی بناء پر اروند کجریوال ’’شدید بے حسی‘‘ کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بن گئے۔ اس واقعہ سے سیاسی حریفوں کے درمیان ایک دوسرے پر الزام تراشی کا سلسلہ شروع ہوگیا۔ عاپ کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا گیا، جس نے مرکزی حکومت کے حصول اراضی آرڈیننس کے خلاف جلسہ عام منعقد کیا تھا۔ پولیس پورے ڈرامہ کو خاموشی سے دیکھ رہی تھی۔ عاپ کے کارکن درخت پر چڑھ گئے اور کاشتکار کو بچانے کی کوشش کی، لیکن اس وقت تک پھانسی کے پھندے نے کاشتکار کی جان لے لی تھی جس کی نعش کچھ دیر تک لٹکتی رہی۔ بعدازاں زمین پر گر پڑی جسے فوری قریبی آر ایم ایل ہاسپٹل منتقل کیاگیا جہاں اسے مردہ قرار دیا گیا۔ مرنے سے پہلے کاشتکار کو اراضی قانون کے خلاف نعرے لگاتے ہوئے سنا گیا۔ اس نے ایک خودکشی نوٹ بھی چھوڑا ہے، جس میں تحریر ہیکہ اسے اپنے والد کی اراضی سے بیدخل کردیا گیا ہے اور غیرموسمی بارشوں سے اس کے خاندان کو زبردست نقصان پہنچا ہے۔ چیف منسٹر دہلی نے جلسہ عام جاری رکھا اور تقریباً 20 منٹ تک تقریر کرتے رہے جس میں انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی پر مالدار ترین لوگوں کیلئے کام کرنے کا الزام عائد کیا اور حصول اراضی آرڈیننس کے اجراء میں عجلت پر تنقید کی۔ سینئر لیڈر کمار وشواس نے پولیس پر کاشتکار کو بچانے کی کوشش نہ کرنے کا الزام عائد کیا تاکہ عاپ کی شبیہہ کو نقصان پہنچ سکے۔ تقریر ختم کرتے ہوئے کجریوال نے کہا کہ ہم نے پولیس سے بار بار درخواست کی کہ اسے نیچے اتار دیا جائے لیکن پولیس ہمارے قابو میں نہیں ہے۔ کم از کم انہیں انسانی بنیادوں پر کارروائی کرنی چاہئے تھی۔ انہوں نے کہا کہ وہ منیش سیسوڈیا کے ساتھ ہاسپٹل جارہے ہیں۔ کاشتکار کی موت کی اطلاع پھیلتے ہی کجریوال اور ان کی پارٹی پر حریف سیاسی پارٹیوں نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر نے بے حسی سے کاشتکار کو بچانے کے بجائے جلسہ عام جاری رکھا۔ انہوں نے تحقیقات اور مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا۔ خودکشی کی وجہ سے زرعی بحران پر پورے ملک کی توجہ مرکوز ہوگئی۔

وزیراعظم نے اپنے ٹوئیٹر پر اس واقعہ پر اظہار رنج و غم کیا اور کاشتکار برادری سے کہا کہ وہ خود کو اکیلے نہ سمجھیں۔ کانگریس نے عاپ اور بی جے پی دونوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے مرکز اور دہلی حکومت کے خلاف خودکشی پر مجبور کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرنے کا الزام عائد کیا۔ کانگریس کے ترجمان ستیہ ورت چترویدی نے کہا کہ خودکشی پر مجبور کرنے کا مقدمہ مرکزی حکومت و ریاستی حکومت کے خلاف درج کیا جانا چاہئے۔ دو افراد جنہیں اس خودکشی کا ذمہ دار قرار دیا جاسکتا ہے، وزیراعظم نریندر مودی اور چیف منسٹر اروند کجریوال ہیں۔ عاپ کے سینئر قائدین کمار وشواس سنجے سنگھ اور اشوتوش نے بعدازاں ایک پریس کانفرنس منعقد کی، جس میں انہوں نے دہلی پولیس پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے کاشتکار کی زندگی بچانے کیلئے کچھ نہیں کیا حالانکہ انہیں ایسا کرنے کیلئے کہا گیا تھا۔ مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے کمشنر دہلی بی ایس بسی سے ٹیلیفون پر بات چیت کی اور انہیں تحقیقات کا حکم دیا۔ بعدازاں بسی نے کہا کہ تحقیقات کا آغاز کیا جاچکا ہے۔ کجریوال جنہوں نے آر ایم ایل ہاسپٹل کا دورہ کیا تھا،

گجیندر سنگھ کی موت پر ان کے ارکان خاندان سے اظہارتعزیت کیا اور ضلع مجسٹریٹ کے ذریعہ تحقیقات کروانے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت دہلی الزام تراشی کے کسی بھی کھیل میں ملوث نہیں ہونا چاہتی کیونکہ یہ ایک المناک سانحہ ہے اور ہر ممکن کوشش کرے گی کہ ایسا واقعہ برسرعام پیش آنے کی وجوہات کی جامع تحقیقات کی جائیں۔ راہول گاندھی اور سیتارام یچوری کے بشمول کئی قائدین نے ہاسپٹل کا دورہ کیا۔ راہول گاندھی نے کہا کہ وہ اس المناک وقت میں بیانات دینا نہیں چاہتے۔ تاہم کاشتکاروں کو تیقن دیا کہ ان کی پارٹی ان کے ساتھ ہے اور کسی کو بھی اس کی اراضی سے محروم کئے جانے کی اجازت نہیں دے گی۔ انہوں نے نوجوان کانگریسی کارکنوں سے اپیل کی کہ کاشتکار کی نعش اس کے آبائی وطن تک پہنچانے میں مدد کریں۔ دریں اثناء عام آدمی پارٹی نے بی جے پی پر جوابی الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی آخری سیاسی پارٹی ہونا چاہئے جس کو اس سلسلہ میں شکایت ہو مودی نے دھماکوں کے باوجود پٹنہ میں اپنا جلسہ عام جاری رکھا تھا اور ہم نے پارلیمنٹ تک اپنا جلوس منسوخ کردیا تھا تاکہ نظم و ضبط کی صورتحال ابتر نہ ہونے پائے۔ کمار وشواس نے کہا کہ بی جے پی کاشتکار کی خودکشی کا استعمال کرکے کاشتکاروں کی پریشانی کے اصل مسئلہ کی جانب سے عوام کی توجہ ہٹانے کی کوشش کررہی ہے۔ اشوتوش نے کہا کہ اگلی بار اگر کوئی شخص خودکشی کی کوشش کرے تو وہ چیف منسٹر دہلی سے اس کو بچانے کی خواہش کرے گا۔ بعدازاں انہوں نے اپنے بیان پر معذرت خواہی کرلی۔

TOPPOPULARRECENT