Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / عثمانیہ میڈیکل کالج و ہاسپٹل کی ترقی کیلئے فوری اقدامات پر زور

عثمانیہ میڈیکل کالج و ہاسپٹل کی ترقی کیلئے فوری اقدامات پر زور

ڈاکٹر اے گوپال کشن ، ڈاکٹر جی شیام سندر کی پریس کانفرنس

ڈاکٹر اے گوپال کشن ، ڈاکٹر جی شیام سندر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 10 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : عثمانیہ میڈیکل کالج اولڈ اسٹوڈنٹس اسوسی ایشن ٹرسٹ و سینئیر ممبرس آف میڈیکل پروفیشن آف تلنگانہ اسٹیٹ نے حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا کہ وہ عثمانیہ میڈیکل کالج اور عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کے علاوہ تلنگانہ میں واقع میڈیکل کالجس اور سرکاری ہاسپٹلس کی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے ضروری اقدامات کرے ۔ آج یہاں ایمیریٹاس چیرمین اسوسی ایشن ٹرسٹ و سینئیر ممبر آف میڈیکل پروفیشن ڈاکٹر اے گوپال کشن سابق وائس چانسلر این ٹی آر یونیورسٹی ڈاکٹر جی شیام سندر نے پریس کانفرنس میں بتائی ۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں متحدہ آندھرا پردیش میں برسر اقتدار آندھرائی حکمرانوں کی جانب سے تلنگانہ میں واقع عثمانیہ میڈیکل کالج ، عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کے علاوہ ریاست تلنگانہ میں موجود بیشتر میڈیکل کالجس اور گورنمنٹ ہاسپٹلس کی ترقی میں کئی رکاوٹیں حائل ہوئی تھیں لیکن اب جب کہ طویل جدوجہد کے بعد حاصل ہونے والی جدید تلنگانہ حکومت سے تلنگانہ کے عوام کئی امیدیں وابستہ رکھے ہوئے ہیں اور ریاست کے غریب عوام جو اپنے علاج و معالجہ کے لیے سرکاری دواخانوں سے ہی رجوع ہوا کرتے ہیں اور غریب مریضوں کی اکثریت صرف سرکاری دواخانہ کے علاج پر ہی تکیہ کرتی ہے ایسے مریضوں کے لیے سرکاری دواخانوں میں انہیں بہتر سے بہتر طبی سہولتوں ، عصری آلات اور مفت ادویات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے ضروری اقدامات کئے جائیں ۔ انہوں نے بتایا کہ متحدہ آندھرا پردیش میں برسر اقتدار آندھرائی قیادت کے دوران ریاست تلنگانہ کے ساتھ کی گئی نا انصافیوں کی واضح مثال اس بات سے ملتی ہے کہ سال 2010 میں اس وقت کے ریاستی وزیر مسٹر کے روشیا نے عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کی جدید بلڈنگ کی تعمیر کے لیے 200 کروڑ روپئے کی رقمی منظوری دی تھی تاہم مذکورہ منظورہ رقومات کا نہ تو اجراء کیا گیا اور نہ ہی اس سلسلہ میں کوئی پیشرفت کی گئی بلکہ اس مسئلہ کو برفدان کی نذر کردیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اسوسی ایشن ٹرسٹ کی جانب سے سال 1992 تا 2010 عثمانیہ میڈیکل کالج کو (1,62,76,139) کروڑ اور عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کو (84,83,278) لاکھ کی بطور امداد رقمی گرانٹس دی گئی ۔ اس موقع پر سابق سپرنٹنڈنٹ عثمانیہ جنرل ہاسپٹل و رکن ٹرسٹ ڈاکٹر سدھیر نائک ، پروفیسر ای این ٹی ہاسپٹل کوٹھی ڈاکٹر ایم وینکٹیشور راؤ ، ڈاکٹر شیام سندر پرساد ایف آر سی ایس اور ٹرسٹی ڈاکٹر این کرشنا ریڈی بھی موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT