Tuesday , October 23 2018
Home / شہر کی خبریں / عدالتی احکامات کے مطابق ٹیچرس کے تقررات

عدالتی احکامات کے مطابق ٹیچرس کے تقررات

پروفیسرس کی مخلوعہ جائیدادوں کو پر کرنے یونیورسٹیز کو اختیار : سری ہری
حیدرآباد ۔ 25 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے ڈاکٹر بی آر امبیڈکر یونیورسٹی میں 6.22 کروڑ روپئے کے مصارف سے تعمیر ہونے والی ایگزامنیشن کی نئی عمارت کا سنگ بنیاد رکھا ۔ 1550 پروفیسرس کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کے لیے یونیورسٹیز کو مکمل اختیارات سونپ دئیے ۔ اس موقع پر میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے وزیر تعلیم و ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ملازمتوں کا بڑی بے چینی سے انتظار کرنے والے لاکھوں بے روزگار نوجوانوں کو مزید انتظار نہیں کرایا جائے گا ۔ ہائی کورٹ کی جانب سے جاری کردہ تازہ احکامات کی روشنی میں ٹیچرس کے تقررات کا تیقن دیا ۔ کڈیم سری ہری نے کہا کہ ہائی کورٹ نے جو حکم دیا ہے اس کا جائزہ لیا جارہا ہے ۔ 10 اضلاع کو بنیاد بنا کر ہی تقررات کے عمل کو پورا کیا جائے گا ۔ ایجنسی علاقوں میں موجود بیروزگار نوجوانوں کو ملازمت فراہم کرنے 31 اضلاع کے لیے نوٹیفیکشن جاری کئے گئے تھے جس کو عدالت نے کالعدم قرار دیتے ہوئے 10 اضلاع کو بنیاد بناکر تقررات کرنے کی ہدایت دی ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ڈاکٹر بی آر امبیڈکر یونیورسٹی میں 6.22 کروڑ روپئے کے مصارف سے امتحانی شعبہ کے لیے نئی عمارت تعمیر کی جارہی ہے ۔ انہوں نے ماضی کے حکمرانوں پر ریاست کی یونیورسٹیز کو نظر انداز کرنے کا الزام عائد کیا ۔ تلنگانہ حکومت نے یونیورسٹیز کو ترقی دینے کے لیے 420 کروڑ روپئے منظور کیے ہیں ۔ جس میں بی آر امبیڈکر یونیورسٹی کے لیے بھی 20 کروڑ روپئے جاری کئے گئے ہیں ۔ جاری کردہ فنڈز سے ہی نئی عمارت تعمیر کی جارہی ہے ۔ کڈیم سری ہری نے کہا کہ تمام یونیورسٹیز میں 1550 پروفیسرس کی جائیدادیں مخلوعہ ہیں ۔ ان جائیدادوں پر تقررات کرنے کے معاملے میں یونیورسٹیز کو مکمل اختیارات سونپ دئیے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹیز میں کنٹراکٹ پر خدمات انجام دینے والے اسسٹنٹ پروفیسرس ، اسوسی ایٹ پروفیسرس کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کی وائس چانسلرس پر مشتمل کمیٹی نے سفارش کی ہے ۔ جس کو حکومت کی جانب سے قبول کرلیا گیا ہے ۔ بہت جلد ان کی تنخواہوں میں اضافہ ہوجائے گا ۔ اس سنگ بنیاد تقریب میں وائس چانسلر امبیڈکر یونیورسٹی پروفیسر کے سیتا راما راؤ ، رجسٹرار وینکٹیا کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT