Tuesday , September 18 2018
Home / ہندوستان / عدالت میں اروند کجریوال کی طلبی سے قبل شواہد کا جائزہ

عدالت میں اروند کجریوال کی طلبی سے قبل شواہد کا جائزہ

نئی دہلی۔/3فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کی عدالت نے عام آدمی پارٹی سربراہ اروند کیجریوال کے خلاف ایک شکایت پر گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرنے کیلئے 9اپریل تاریخ مقرر کی ہے جس میں یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ کیجریوال نے رائے دہندوں کو یہ ترغیب دی ہے کہ کانگریس اور بی جے پی سے رشوت لیکر عام آدمی پارٹی کو ووٹ دیں۔ میٹرو پالیٹن مجسٹریٹ رچا

نئی دہلی۔/3فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کی عدالت نے عام آدمی پارٹی سربراہ اروند کیجریوال کے خلاف ایک شکایت پر گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرنے کیلئے 9اپریل تاریخ مقرر کی ہے جس میں یہ الزام عائد کیا گیا ہے کہ کیجریوال نے رائے دہندوں کو یہ ترغیب دی ہے کہ کانگریس اور بی جے پی سے رشوت لیکر عام آدمی پارٹی کو ووٹ دیں۔ میٹرو پالیٹن مجسٹریٹ رچا گوسین سولنکی نے کہا کہ کیجریوال کو عدالت میں طلب کرنے سے قبل شواہد اور ثبوتوں کو ریکارڈ کرنے کیلئے9اپریل تاریخ مقرر کی گئی ہے۔ کیس کی سماعت کے دوران ایڈوکیٹ اروند کمار جو شکایت کنندہ بھی ہیں یہ استدلال پیش کیا کہ کیجریوال نے عوام کو سیاسی جماعتوں سے رشوت لینے کیلئے اُکسایا ہے، جبکہ عام آدمی پارٹی نے رائے دہندوں سے کہا تھا کہ کانگریس اور بی جے پی سے رقم لیں لیکن ووٹ ان کی پارٹی کو دیں۔ شکایت کنندہ نے الزام عائد کیا کہ اروند کیجریوال سابق چیف منسٹر ہیں اور یہ جانتے ہیں کہ رشوت لیناقانوناً جرم ہے اس کے باوجود رائے دہندوں کو ایسا کرنے کی ترغیب دی ہے۔ انہوں نے کیجریوال کو عدالت کے کٹہرے میں لانے اور شوت کی ترغیب دینے پر سزا دینے کی عدالت سے درخواست کی۔

TOPPOPULARRECENT