Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / عدالت کے فیصلہ پر کوئی حیرت نہیں

عدالت کے فیصلہ پر کوئی حیرت نہیں

مکہ مسجد میں ہوئے بم دھماکہ میں گرفتار شعیب جاگیردار
حیدرآباد 16 اپریل (سیاست نیوز) مکہ مسجد بم دھماکہ کیس کی تحقیقات کے نام پر پہلا نشانہ بننے والے شعیب جاگیردار نے کہاکہ عدالت کا یہ فیصلہ اُن کے لئے کوئی حیران کن نہیں ہے کیوں کہ خاطیوں کا تعلق زعفرانی طاقتوں سے ہے۔ 18 مئی 2007 ء کو دھماکہ کے بعد حیدرآباد سٹی پولیس نے سینئر پولیس عہدیدار ہریش کمار گپتا کی زیرقیادت اسپیشل انوسٹی گیشن سیل (ایس آئی سی) قائم کیا تھا اور اِس ٹیم نے مہاراشٹرا کے ضلع جالنہ پہنچ کر شعیب جاگیردار نامی ایک شخص کو جو کیروسین ڈیلر تھے، حراست میں لے لیا تھا اور اِس سلسلہ میں پولیس نے شعیب جاگیردار کے ایک قریبی رشتہ دار کے فرزند محمد عمران خان کو بھی حراست میں لے لیا تھا۔ شعیب جاگیردار نے کہاکہ اُنھیں جالنہ سے حراست میں لے کر شہر حیدرآباد منتقل کیا جارہا تھا کہ راستہ میں مانتا علاقہ میں چائے کے لئے پولیس کی ٹیم رُکی تھی اور کچھ ہی دیر میں میڈیا میں خبر عام ہوگئی تھی کہ مکہ مسجد بم دھماکہ میں شعیب جاگیردار کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ اُنھوں نے پولیس کی جانب سے دی گئی اذیتوں کا بیان کرتے ہوئے کہاکہ اُنھیں ایک فرضی مقدمہ میں ماخوذ کیا گیا تھا اور اُنھیں ذہنی اور جسمانی اذیتیں دی گئیں حتیٰ کہ اُن پر جیل میں تھرڈ ڈگری کا بھی استعمال کیا گیا تھا۔ اُنھوں نے کہاکہ مکہ مسجد بم دھماکہ کے اصل ملزم سوامی اسیمانند کو آسانی سے ضمانت ہوگئی تھی لیکن وہ (شعیب) بے قصور رہنے کے باوجود بھی 7 مہینے تک جیل میں محروس رہے۔ شعیب جاگیردار نے کہاکہ اُن کی اچانک گرفتاری اور اُن پر دہشت گردی کا الزام عائد کرنے کے بعد اُن کی خاندانی زندگی مکمل طور پر تباہ ہوگئی تھی اور اُن کا کوئی پرسان حال نہیں تھا۔ اُنھوں نے کہاکہ پولیس کی مسلسل ہراسانی کے نتیجہ میں اُن کا اور اُن کے ارکان خاندان کا جینا دشوار ہوگیا تھا اور اُنھیں جو اذیتیں دی گئیں وہ اُسے الفاظ میں بیان نہیں کرسکتے۔ عدالت کے اِس فیصلے پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے شعیب جاگیردار نے کہاکہ حکومت اور تمام ایجنسیاں ایسے تعصب پسند عہدیداروں کے اشارے پر کام کررہی ہیں جو ملک بھر کے مسلمانوں کو دہشت گردی کے نام پر فرضی مقدمات میں ماخوذ کرنے میں ماہر ہیں اور یہ ممکن نہیں کہ ہندو دہشت گردوں کو اِس قسم کے مقدمات میں سزا سناسکے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT