Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / عدلیہ میں مسلم وکلاء کی گھٹتی نمائندگی باعث تشویش

عدلیہ میں مسلم وکلاء کی گھٹتی نمائندگی باعث تشویش

نئی دہلی۔ 25اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام)عدلیہ کے تمام شعبوں میں مسلم وکلاء کی کم ہوتی نمائندگی پر تشویش کا اظہار کرتے سپریم کورٹ کے وکیل اور اٹارنی سالیسیٹر سرفراز احمد صدیقی نے کہاکہ اگر بروقت اس پر سنجیدگی سے غور و خوض نہیں کیاگیا تو آنے والے حالات مسلمانوں کے لئے مزید خراب ہوسکتے ہیں۔یہ بات انہوں نے گزشتہ روز مسلم وکلاء کی ایک میٹنگ میں کہی۔انہوں نے کہاکہ ہمارے درمیان اتحاد و اتفاق کے فقدان اور کسی محاذپر یکجا نہ ہونے کی وجہ سے شعبہ عدل وانصاف اور اس سے منسلک شعبوں میں ان کی نمائندگی دن بہ دن کم ہوتی جارہی ہے ۔ یہاں تک عدالت عالیہ اور عدالت عظمی میں بھی نمائندگی کم ہوگئی ہے ۔ اس لئے ہمیں بار کونسل سمیت تمام اداروں میں متحد ہوکر اپنی نمائندگی بڑھانے میں سنجیدگی سے غور وخوض کرنا چاہئے ۔ صدیقی جو آل انڈیا ایڈووکیٹس فورم فور جسٹس کے سکریٹری جنرل بھی ہیں، نے کہاکہ دہلی بار کونسل جو سب سے اہم ادارہ ہے ، اس میں ہمارے کم از کم تین امیدوار آسانی سے جیت سکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT