Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / عدل و انصاف، احسان و رواداری، اسلام کا طرۂ امتیاز

عدل و انصاف، احسان و رواداری، اسلام کا طرۂ امتیاز

اُردو یونیورسٹی میں ڈاکٹر شیخ محمد ابن یحییٰ النینوی کا خصوصی لکچر
حیدرآباد، 7؍ دسمبر (پریس نوٹ)اسلام عدل و انصاف پر مبنی ہے۔ اللہ تعالیٰ نے بہت ہی جامع انداز میں قرآن مجید میں دو چیزوں کا حکم فرمایا ہے، وہ عدل اور احسان۔ عدل کہتے ہیں مناسب بدلہ دینے کو، جبکہ احسان کلمہ ماخوذ ہے حسن سے، جس کا معنی اچھے کے ہوتے ہیں۔ احسان کا مطلب یہ نہیں کہ اچھائی کا بدلہ اچھائی سے دیا جائے، بلکہ احسان کے معنی یہ ہیں کہ برائی کا بدلہ اچھائی سے دیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی اور دی قرآن فائونڈیشن کے اشتراک سے آج یونیورسٹی کیمپس میں منعقدہ ایک خصوصی لکچر ’’اسلام اور رواداری‘‘ میں بین الاقوامی شہرت یافتہ اسلامی اسکالر شیخ محمد بن یحییٰ النینوی نے کیا۔ ڈاکٹر محمد اسلم پرویز، وائس چانسلر نے صدارت کی۔ ڈاکٹر النینوی نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے آدم علیہ السلام سے لے کر محمد مصطفیؐ تک تمام انبیاء میں سے کسی بھی نبی کو یہ حکم نہیں دیا کہ اسلامی تعلیمات اور توحید کو طاقت کے ذریعہ نافذ کرے، بلکہ اس کے برعکس وقت کے طاغوت و فرعون کی طرف جب موسیٰ علیہ السلام کو مبعوث فرمایا تو اس حکم کے ساتھ کہ اس کو نرمی سے نصیحت کریں۔ حضور پاکﷺ کی سیرت میں بھی ایسے بہت سے واقعات ہیں جہاں آپؐ نے سخت عمل کا بدلہ دعائے خیر سے دیا۔ فتح مکہ کے موقع پر حضرت محمدﷺ نے تمام لوگوں کے لیے عام معافی کا اعلان کردیا۔ اسی طرح مدینہ طیبہ میں حضور پاکؐ نے جب ایک غیر مسلم جنازہ دیکھا تو آپ کھڑے ہوگئے۔ صحابہ نے جب پوچھا تو فرمایا کیا وہ انسان نہیں ہے۔ڈاکٹر اسلم پرویز نے کہا کہ قرآن کو سمجھ کر اور ترجمہ کے ساتھ پڑھنے کی ضرورت ہے۔ آج جو دین رواداری کا علمبردار ہے اسی کے پیروئوں کو رواداری اپنانے کی ضرورت ہے تاکہ وہ اس پیغام کو اپنے کردار سے تمام انسانیت تک پہنچا سکیں۔پروفیسر سید محمد حسیب الدین قادری، ڈین برائے لسانیات، السنہ و ہندوستانیات نے خطبہ استقبالیہ دیا۔ ڈاکٹر سید علیم اشرف جائسی، اسوسیئٹ پروفیسر شعبۂ عربی و صدر دی قرآن فائونڈیشن نے کلمات تشکر ادا کیے۔ نظامت کے فرائض محمد عبدالعلیم، نے انجام دیئے۔ اس اجلاس میں اساتذہ ، طلبہ اور غیر تدریسی عملہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT