Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / عراق میں ترک فوج کا حملہ ، داعش کے 18 جہادی ہلاک

عراق میں ترک فوج کا حملہ ، داعش کے 18 جہادی ہلاک

بغداد ۔ 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ترکی کا کہنا ہے کہ عراق کے شمالی علاقے بعشیقہ میں ترک فوج پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کا حملہ پسپا کر دیا گیا ہے۔ ترک فوجی دولت اسلامیہ کے زیرِ قبضہ شہر موصل کے نزدیک بعشیقہ کیمپ میں عراقی کرد فورسز کو تربیت دینے کے لیے تعینات ہیں۔ عراق میں کردستان کے نیم خود مختار علاقے سے ترک حکومت کے قریبی روابط ہیں۔ ترک حکام کے مطابق جمعہ کو ہونے والی اس کارروائی کے دوران 18 شدت پسند ہلاک ہوئے ہیں جبکہ ترک فوج کو کوئی جانی نقصان نھیں اٹھانا پڑا۔ ترکی نے گذشتہ برس دسمبر میں کم از کم 150 فوجی شمالی عراق کے لیے روانہ کئے تھے اور اس کا کہنا تھا کہ انھیں فوجی تربیت دینے والے اہلکاروں کی حفاظت کے لیے بھیجا گیا ہے۔ تاہم عراق ان فوجیوں کی اپنے ملک میں تعیناتی کو اپنی خودمختاری کی خلاف ورزی قرار دیتا رہا ہے۔ بعدازاں ترک وزارت خارجہ نے بھی فوج کی تعیناتی کے معاملے پر عراق کے ساتھ ’اطلاعات کی غلط ترسیل‘ کا معاملہ تسلیم کیا تھا اور عراق سے کچھ فوجیوں کو واپس بلا لیا تھا۔ یہ اقدامات امریکی صدر بارک اوباما کی ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان کے ساتھ بات چیت کے بعد کیے گئے تھے۔ صدر اوباما نے صدر اردوغان سے کہا تھا کہ وہ بغداد کے ساتھ ’کشیدگی کو کم کریں۔‘ خیال رہے کہ ترکی دولتِ اسلامیہ کے خلاف امریکی قیادت میں قائم اتحاد کا حصہ ہے۔

دولت اسلامیہ سے ترک تعلق کے مطالبہ پر ماں کا قتل
طرابلس ۔ 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) شام میں اطلاعات کے مطابق خود کو دولتِ اسلامیہ کہلانے والے شدت پسند تنظیم کے ایک شدت پسند نے اپنی ماں کو اس وجہ سے سرعام قتل کر دیا کیونکہ انھوں نے اسے گروپ کو چھوڑنے کا کہا تھا۔ شام کی صورتحال پر نظر رکھنے والے کارکنوں کے مطابق یہ واقعہ رقہ میں ڈاک خانے کے سامنے پیش آیا۔ عینی شاہدین کے مطابق 21 سالہ علی ساقر نے اپنی 45 سالہ ماں لینا القاسم کو گولی مار کر قتل کر دیا۔ اطلاعات کے مطابق لینا القاسم نے اپنے بیٹے سے کہا تھا کہ امریکہ کی قیادت میں فوجی اتحاد دولتِ اسلامیہ کو ختم کر دے گا اور انھوں نے کوشش کی تھی کہ بیٹا ان کے ساتھ شہر چھوڑ دے۔ لینا القاسم کے بیٹے نے اپنی ماں کے خیالات کے بارے میں گروپ کو آگاہ کیا تو انھوں نے لینا القاسم کو قتل کرنے کا حکم دیا۔ علی ساقر نے راقہ میں ڈاک خانے کے باہر سینکڑوں افراد کی موجودگی میں اپنی ماں کو گولی مار کر قتل کر دیا۔2014 میں دولتِ اسلامیہ میں عراق اور شام کے ایک بڑے حصے پر قبضہ کرنے کے بعد خلاف کے قیام کا اعلان کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT