Saturday , October 20 2018
Home / Top Stories / عراق میں جلوس جنازہ پر دولت اسلامیہ جنگجوؤں کا حملہ ، 25 ہلاک

عراق میں جلوس جنازہ پر دولت اسلامیہ جنگجوؤں کا حملہ ، 25 ہلاک

People are reflected in the window of a closed shop in central Irbil, Iraq, Wednesday, Oct. 25, 2017. In Sept. 2017, Iraq's Kurds celebrated their symbolic vote for independence, but instead of moving forward with negotiations toward a smooth divorce from Baghdad, they have lost their most important oil-producing city to Iraqi troops, squeezing a hurting economy and dashing the hopes of an independent state. (AP Photo/Felipe Dana)

سمرہ ۔ 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کم از کم 25 افراد ہلاک اور دیگر 18 زخمی ہوگئے جبکہ جہادیوں کے ہاتھوں ہلاک عراقی جنگجوؤں کے جلوس جنازہ پر دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے بم حملہ کیا۔ جلوس جنازہ پر دو بم حملے کئے گئے جس کی وجہ سے اسدیرہ میں دہشت پھیل گئی۔ دیہات کے میئر صلاح الدین شالان نے کہا کہ یہ علاقہ دولت اسلامیہ کا ملک کے شمالی علاقہ میں آخری مستحکم گڑھ تھا جسے عراق کی سرکاری افواج نے حکومت کا قبضہ بحال کرتے ہوئے دولت اسلامیہ سے نجات دلا دی۔ آج کا حملہ 16 جنوری کے دوہری خودکش بم حملہ کے بعد جس میں 31 افراد ہلاک ہوئے تھے، عراق کا مہلک ترین حملہ تھا۔ بیشتر شیعہ نیم فوجی تنظیمیں جن میں سنی قبائیلی افواج بھی شامل ہیں، فوج کے شانہ بشانہ جہادیوں کو گذشتہ سال سے ملک سے نکال باہر کرنے کیلئے مسلسل جنگ کررہی ہیں لیکن دولت اسلامیہ عراق کی سرزمین کے وسیع علاقوں سے اپنا قبضہ ختم کرنے کے باوجود بعض علاقوں پر ہنوز قابض تھی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT