Monday , January 22 2018
Home / عرب دنیا / عراق میں داعش کے ہاتھوں 500 یزیدی ہلاک ، کئی زندہ دفن

عراق میں داعش کے ہاتھوں 500 یزیدی ہلاک ، کئی زندہ دفن

بغداد ۔ /10 اگست(سیاست ڈاٹ کام) عراق کی حکومت نے بتایا کہ داعش کے ہاتھوں عراق کی یزیدی اقلیت کے کم از کم 500 ارکان ہلاک ہوئے ہیں ۔ ان میں سے کئی افراد کو زندہ دفن کردیا گیا ہے۔ ان کی خواتین کو غلامی میں شامل کیا گیا ۔عراق کے انسانی حقوق کے وزیر سیاالسودانی نے الزام عائد کیا کہ عراق کے عسکری گروپ نے یزیدی اقلیت کو اسلام قبول کرنے یا موت کو

بغداد ۔ /10 اگست(سیاست ڈاٹ کام) عراق کی حکومت نے بتایا کہ داعش کے ہاتھوں عراق کی یزیدی اقلیت کے کم از کم 500 ارکان ہلاک ہوئے ہیں ۔ ان میں سے کئی افراد کو زندہ دفن کردیا گیا ہے۔ ان کی خواتین کو غلامی میں شامل کیا گیا ۔عراق کے انسانی حقوق کے وزیر سیاالسودانی نے الزام عائد کیا کہ عراق کے عسکری گروپ نے یزیدی اقلیت کو اسلام قبول کرنے یا موت کو گلے لگانے کی پیشکش کی تھی جس کے بعد انہوں نے یزیدی اقلیت کے کئی ارکان کو ہلاک کردیا یا زندہ دفن کردیا ۔ اس الزام کی آزادانہ طور پر کوئی توثیق نہیں ہوسکی ۔قبل ازیں امریکی جٹ طیاروں نے عراق کے جہادیوں پر حملے تیز کردیئے ہیں ۔

جنہوں نے گزشتہ ایک ہفتہ سے عراق کی پہاڑیوں پر مقامی شہریوں کو محصور کرکے رکھا تھا ۔ اس کارروائی میں برطانیہ اور فرانس بھی آج شامل ہوگئے ۔ عراقیوں کی بڑی تعداد کو داعش کے چنگل سے نکالنے کیلئے امریکی کوششوں کے ساتھ انہیں فاقہ کشی سے بھی بچانے کی عالمی دوڑ شروع ہوگئی ہے ۔ عراق پر امریکہ کی جانب سے فضائی فورس تعینات کرنے کے دو دنوں بعد مغربی امدادی کوششوں کو بھی تیز کردیا گیا ہے ۔ امریکی صدر بارک اوباما نے خبردار کیا ہے کہ عراق میں نسل کشی کا امکان پیدا ہوسکتا ہے ۔ ایک ہفتہ قبل سنجر پہاڑی پر مملکت اسلامیہ کے عسکری گروپ کے حملوں کے بعد ہزاروں عراقی جن میں یزیدی اقلیت سے تعلق رکھنے والے ارکان ہیں بھی جان بچانے کے لئے قریبی پہاڑی علاقوں میں پناہ لی تھی ۔ تب سے یہ لوگ کوہِ سنجر پر پھنسے ہوئے ہیں ۔ گرما کی شدید گرمی اور غذا و پانی کی قلت کے باعث یہ لوگ پریشان ہیں ۔ ایک یزیدی لیڈر نے کل انتباہ دیا تھا کہ اگر یہی حالت رہی تو ہم فاقہ کشی سے مرجائیں گے ۔

یزیدی شہریوں کو بچنے کے لئے امریکی فورس نے چار کامیاب حملے کئے ہیں ۔ یہاں کوہِ سنجر سے اندھادھند حملے کئے جارہے تھے ۔ اوباما نے کہا تھا کہ انہیں یقین ہے کہ اسرائیلی ایرفورس آئی ایس کے عسکریت پسندوں کو پہاڑ پر جانے سے روکنے میں کامیاب ہوگئی ۔ اسی دوران تقریباً 20 ہزار شہری جنہیں جہادیوں نے محصور کررکھا تھا شمالی عراق میں ایک پہاڑی سے محفوظ طریقہ سے شام فرار ہوگئے اور وہاں سے کردش فورس کی حمایت میں وہ واپس عراق میں داخل ہوئے ہیں ۔ عراق کے خودمختار کردش حکومت کے عہدیدار نے کہا کہ یہاں سے 30 ہزار بے گھر افراد جو کوہِ سنجر کو فرار ہوئے تھے شام کے راستے پر واپس عراق میں داخل ہوئے ہیں ۔

عراق میں تشدد پر پوپ کا اظہار برہمی
ویٹکن سٹی ۔ /10 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پوپ فرانسیس نے عراق میں مذہبی اقلیتوں پر ہورہے تشدد پر برہمی ظاہر کی جہاں جان بچاکر بھاگنے والے بچے بھوک و پیاس سے فوت ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ان کا قاصد کل اس علاقہ کی صورتحال کا جائزہ لینے روانہ ہوگا ۔ اپنے اتوار کے روایتی اجتماعی خطاب کے دوران سخت لب و لہجہ والے پیام میں پوپ نے کہا کہ عراق سے آنے والی خبریں ہم کو بے تاب کررہی ہیں ۔ انہوں نے ان خبروں کا حوالہ دیا کہ عیسائیوں کے بشمول ہزاروں مذہبی اقلیتیں جان بچانے اپنے گھروں سے مجبوراً فرار ہورہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT