Monday , May 21 2018
Home / دنیا / عرب تاجروں کا بائیکاٹ کیا جائے : اسرائیلی وزیر

عرب تاجروں کا بائیکاٹ کیا جائے : اسرائیلی وزیر

عرب تاجروں سے کچھ نہ خریدنے وادی آراء کے عوام سے اوگڈورلبرمین کی اپیل
یروشلم ۔ 10ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام) اسرائیل کے سخت گیر وزیر دفاع اوگ ڈور لبرمین نے اسرائیلیوں سے اپیل کی کہ وہ شمالی ضلع میں جہاں صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ کے یروشلم کو یہودی مملکت کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلہ کے خلاف پُرتشدد احتجاجی مظاہرے کئے گئے ہیں عرب تاجروں کا بائیکاٹ کریں ۔ وادی آراء ( جو اسرائیل کے شمال میں ہے) کے علاقہ کے شہریوں کو عرب تاجرین کا بائیکاٹ کرنا چاہیئے جو مملکت اسرائیل سے تعلق نہ رکھتے ہوں ‘ فوجی ریڈیو سے عوام سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسرائیلی عوام کو سمجھ لینا چاہیئے کہ وہ عرب تاجروں کو یہاں دیکھنا نہیں چاہتے ۔ وہ ہمارا حصہ نہیں ہے ۔ وزیر دفاع نے کہا کہ ان کا اس ملک سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ وادی آراء میں جو کچھ ہورہا ہے یہ ناقابل برداشت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسی وجہ سے وہ وادی آراء کے عوام کی جانب سے عرب تاجروں کے بائیکاٹ کی اپیل کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عرب تاجروں کے پاس نہ جائیں ‘ انہیں یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ حزب اللہ کے پرچم ‘ فلسطینی پرچم اور تصویریں ( حزب اللہ کے قائدحسن نصراللہ کی تصویریں ) عرب افراد کیلئے ناقابل برداشت ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہی عرب تاجروں کی داخلی تباہی ہوگی ۔ بے چینی کے دوران سنگباری کرنے والے افراد نے ایک مسافر بس کو بھی حملہ کا نشانہ بنایا تھا ۔ اس کی کھڑکیوں کے شیشے چکناچور کردیئے تھے اور ڈرائیور بھی معمولی زخمی ہوا تھا ۔ ایک اسرائیلی صحافی نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ فسادیوں کی سنگباری سے بچ کر فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا تھا لیکن اس کی موٹر سیکل تباہ کردی گئی ۔ پولیس نے وادی آراء کے دو شہریوں کو اس سلسلہ میں گرفتار کرلیا ۔

TOPPOPULARRECENT