Wednesday , November 22 2017
Home / ہندوستان / عشرت جہاں حلف نامہ پر بی جے پی اور حکومت کی کانگریس اور چدمبرم پر تنقید

عشرت جہاں حلف نامہ پر بی جے پی اور حکومت کی کانگریس اور چدمبرم پر تنقید

نئی دہلی ۔ 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی اور حکومت نے آج عشرت جہاں مقدمہ میں کانگریس پر الزام عائد کیا کہ وہ چاہتی تھی کہ نریندر مودی کا ’’خاتمہ کردیا جائے‘‘۔ یہ سازش صدر کانگریس سونیا گاندھی کی ’’سرگرمی‘‘ سے تیار کی گئی تھی۔ اخباری اطلاعات کا حوالہ دیتے ہوئے بی جے پی اور حکومت نے الزام عائد کیا کہ اس دور کے مرکزی وزیرداخلہ پی چدمبرم نے انکاونٹر مقدمہ میں پہلے حلف نامہ پر دستخط کئے تھے۔ موجودہ مرکزی وزیر نرملا سیتارام نے کہا کہ کانگریس خاص طور پر سونیا گاندھی اور اس کے فرزند راہول گاندھی کو ذمہ داری قبول کرنی چاہئے کیونکہ چدمبرم نے بعد میں مختلف حلفنامہ داخل کیا تھا اور ان کے اشارہ پر ہی ایسا کیا گیا تھا کیونکہ وزیراعظم نریندر مودی سے سیاسی سطح پر مقابلہ کرنے کیلئے یہ حلفنامہ انتہائی سخت محسوس ہورہا تھا۔ سیتارامن نے کہا کہ وہ خاموشی سے اس دہشت گردی کے منصوبہ پر عمل کرتے ہوئے اپنے سیاسی حریف کا صفایا کرنا چاہتے تھے لیکن محکمہ سراغ رسانی نے ان کی سازش ناکام بنادی۔ مرکزی وزیر کرن رجیجو نے کانگریس اور چدمبرم پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ چدمبرم اپنے طور پر ایسی ’’قوم دشمن کارروائی ‘‘ نہیں کرسکتے تھے انہوں نے ایسا صدر اور نائب صدر کانگریس کے اشارہ پر کیا تھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT