Friday , September 21 2018
Home / Top Stories / عصمت ریزی و قتل کے مجرمین کو سزائے موت کا مطالبہ

عصمت ریزی و قتل کے مجرمین کو سزائے موت کا مطالبہ

آئی ٹی پروفیشنلس کا نیکلس روڈ پر کینڈل لائٹ مارچ‘ پرانے شہر میں ریلی ‘ انسانیت سوز جرم کی مذمت

حیدرآباد ۔ 15 ؍اپریل ( سیاست نیوز) اترپردیش میں بی جے پی رکن اسمبلی کی طرف سے گرہست خاتون کی مبینہ عصمت ریزی اور جموں و کشمیر کے ضلع کٹھوا میں ایک آٹھ سالہ لڑکی کے اغواء کو مسلسل آٹھ دن تک اجتماعی عصمت ریزی کے بعد وحشیانہ انداز میں قتل کے انسانیت سوز واقعات کے خلاف شعبہ انفارمیشن ٹکنالوجی (آئی ٹی) کے ماہر پیشہ ور لڑکے لڑکیوں نے پروفیشنلس سالیڈیٹری فورم کے زیر اہتمام احتجاج کیا ۔ آئی اور بغیرآئی ٹی ملازمین کے علاوہ طلبہ نوجوانوں کی جانب سے نیکلس روڈ پر کینڈل لائٹ مارچ کیا گیا ۔ اس خاموش احتجاج میں بھی ان کے چہروں پر غم و غصہ کے آثار نمایاں طور سے محسوس ہو رہے تھے جو نعرے لگاتے ہوئے مجسمہ اندراگاندھی کے قریب احتجاج کرتے ہوئے دیکھے گئے ۔ ان احتجاجیوں نے مرکزی حکومت سے مانگ کی کہ وہ بڑے بلندبانگ دعووں کے ساتھ اقتدار سنبھالی لیکن اس نے اپنے چار سالہ اقتدار میں وہ تمام بتادیا کہ جس کو کبھی سونچا اور دیکھا نہ تھا ۔ احتجاجیوں نے کہا کہ آج شہری اپنے حقوق سے محروم ہیں ۔ لڑکیوں کو بڑی آزادی کے ساتھ ان پر حملہ ‘ عصمت ریزی بنایا جا رہا ہے اور خاطی آزادانہ طورپر گھومتے نظر آتے ہیں ۔ عبدالجبار صدر پروفیشنل سالیڈریٹی فورم جو اس کی قیادت کر رہے تھے کہا کہ خاطیوں کو سخت سزاء دی جانی چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ جب تک حکومت کوئی منظم پروگرام کے تحت اس پر روک نہیں لگاتی اس وقت تک خاموش نہیں بیٹھا جائیگا ۔ سید سلطان محی الدین ‘ عبدالملک راڈری ‘ طارق ‘ محمد رفیق ‘ محمد مدبر ‘ سیف الاسلام نے کہاکہ نریندرمودی اپنی قیادت میں ملک میں سنگھی ماحول پیدا کر رہے ہیں اس سے بیٹوں کو بچانا بے حد ضروری ہے ۔ چند ارکان پارلیمان اور سیاسی قائدین کی جانب سے اس بات کا مطالبہ کیا گیا تھا کہ خواتین کے خلاف ایسے سنگین جرائم کے پیش نظر خاطیوں کو موت کی سزا ہونا چاہئے ۔ اب اس طرح کا قانون مدون کرنے کی سخت ضرورت ہے تب ہی اس اس پرروک لگوایا جاسکتا ہے۔ عصمت ریزی کے واقعہ کے خلاف پرانے شہر سے تعلق رکھنے والے روڈی شیٹر ایوب خان نے بھی فتح دروازہ تا موسی باولی نکالی گئی کینڈل لائٹ ریلی میں شرکت کی ۔ اس موقع پر ایوب خان نے کہا کہ کمسن لڑکی کی عصمت ریزی واقعہ ملک بھر کے لئے شرمندگی کا سبب ہے اور اس میں ملوث افراد کو سزاء موت دی جائے ۔

TOPPOPULARRECENT