Thursday , October 18 2018
Home / شہر کی خبریں / عصمت فروشی ، ہر سماج کا سنگین مسئلہ

عصمت فروشی ، ہر سماج کا سنگین مسئلہ

مسز کیتھرین ہاڈا قونصل جنرل امریکہ متعینہ حیدرآباد کا خطاب
حیدرآباد۔ 14مارچ(سیاست نیوز) عصمت فروشی ہر سماج کا سنگین مسئلہ ہے اور ہر سماج میں اس عمل کو معیوب سمجھا جاتاہے۔ امریکہ اور ہندستان اس معاملہ میں میں یکساں مسائل کا شکار ہے اور اس مسئلہ کو حل کرنا ہماری اپنی ذمہ داری ہے۔ مسز کیتھرین ہاڈا قونصل جنرل امریکہ متعینہ حیدرآباد نے امریکی قونصل خانہ اور پرجوالہ نامی تنظیم کی جانب سے منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کے دوران یہ بات کہی۔ انہوںنے بتایاکہ سال گذشتہ امریکہ میں 340 افرادکو عصمت فروشی سے متعلق مقدمات میں گرفتار کئے گئے۔ انہوں نے اس موقع پر انسانی اسمگلنگ کے واقعات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ انسانی اسمگلنگ کے مسائل کا سامنا بھی بیشتر تمام ممالک کو ہے اور تین سال قبل امریکی قونصل خانہ حیدرآباد نے پرجوالہ نامی تنظیم کے ساتھ ریاست بھر میں عوامی شعور بیداری مہم چلائے جس کا فائدہ لاکھوں افراد کو ہوا اور لاکھوں افراد کو اس سنگین مسئلہ سے واقف کروایا گیا۔ اس تقریب میں ڈاکٹر سنیتا کرشنن ‘تلگو فلم اداکارہ مسز املہ ‘ مسٹر مہیش بھگوت کمشنر آف پولیس سائبر آباد‘ مسٹر اینڈریو فلمنگ ‘ جسٹس کوڈنڈا رام ‘ جسٹس ایس وی بھٹ‘ مسز سومیا مشرا کے علاوہ دیگر اہم شخصیات موجود تھیں۔ جسٹس کوڈنڈا رام نے اس موقع پر اپنے خطاب کے دوران تلگو فلم صنعت کو مشورہ دیا کہ وہ اس سنگین مسئلہ پر شعور اجاگر کرنے والی فلمیں تیار کریں تاکہ عوام کو اس کے متعلق پتہ چلے۔ انہوںنے فلمی صنعت کو تاکید کی کہ وہ عورت کو کسی شئے کے طور پر پیش کرنے کے کلچر کو ختم کریں ۔ اس موقع پر انسانی اسمگلنگ اور عصمت فروشی کے واقعات پر تیار کی گئی ایک فلم کی بھی نمائش کی گئی اور اس فلم کی اس تقریب میں موجود تمام اہم شخصیتوں نے ستائش کی۔ ڈاکٹر سنیتا کرشنن نے بتایا کہ وہ گذشتہ 21برسوں سے اس مسئلہ پر جدوجہد کر رہی ہیں اور اب تک ان کی تنظیم کی جانب سے ان مسائل کا شکار 18ہزار خواتین کی بازآبادکاری کی گئی ہے۔ اس موقع پر مسٹر اینڈریو فلمنگ ڈپٹی ہائی کمشنر برطانیہ کے علاوہ مسٹر مہیش مرلی دھر بھگوت ‘ مسٹر الو اروند‘ جسٹس ایس وی بھٹ اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔

TOPPOPULARRECENT