Wednesday , August 15 2018
Home / شہر کی خبریں / عظیم تر بلدیہ کی حدود میں 1.8 لاکھ کیمروں کی تنصیب

عظیم تر بلدیہ کی حدود میں 1.8 لاکھ کیمروں کی تنصیب

فی کیلو میٹر پر 288 کیمرے اور آبادی کے تناسب سے 55 افراد کیلئے ایک کیمرہ
حیدرآباد ۔ 14 نومبر (سیاست نیوز) ماضی قریب تک پولیس جرائم واقع ہونے کے بعد میدان میں آیا کرتی تھی مگر اب سائنس اور ٹیکنالوجی کی دن بدن ترقی کی وجہ سے پولیس جرائم وقوع پذیر ہونے سے پہلے ہی میدان عمل میں آرہی ہے۔ شہر کی پولیس نے حفاظتی اقدامات اور جرائم کی روک تھام کیلئے سارے شہر کو سی سی کیمروں کے ذریعہ اپنے کنٹرول میں کررہی ہے۔ جرم کی تحقیقات نہیں بلکہ جرمہی وقوع پذیر نہ ہونے کے اقدامات کررہی ہے۔ اس مناسبت سے پولیس نے 1.8 لاکھ سی سی کیمروں کی مدد سے کمانڈ کنٹرول روم کے ذریعہ سارے شہر پر نظر رکھ رہی ہے اور مجرمین کی گرفتاری میں مددگار ٹیکنالوجی کے استعمال سے مجرمین کی کمر توڑ رہی ہے اور سی سی کیمروں کی تنصیب سے شہر میں جرائم کی تعداد قابل لحاظ حد تک کم ہوتی جارہی ہے اور سی سی کیمروں کے ذریعہ سارے شہر پر نظر رکھنے کیلئے بشیرباغ میں واقع کمشنریٹ میں عصری ٹیکنالوجی سے لیس کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر قائم کیا گیا ہے جو بہت جلد اپنا کام شروع کرنے والا ہے اور اس سنٹر میں خدمات انجام دینے کیلئے خصوصی طور پر 28 افراد کا تقرر کیا گیا ہے اور یہ ملازمین 24 گھنٹے تین شفٹوں میں خدمات انجام دیں گے۔ جرائم زیادہ ہونے کے مقامات اور اوقات کی پولیس نے نشاندہی کرلی ہے اور ان مقامات پر موجود کیمروں پر خصوصی نظر رکھی جائے گی۔ پولیس نے پرانے مجرمین اور موسٹ وانٹیڈ افراد کی شناخت کیلئے فیشیل ریکائگنازیشن سافٹ ویر تیار کرلی ہے۔ مجرمین اور موسٹ وانٹیڈ مجرمین کی تصاویر انٹرنیٹ کے ذریعہ اس سافٹ ویر سے جوڑ دی گئی ہے اور شہر میں موجود تمام سی سی کیمروں کو بھی اس سافٹ ویر سے جوڑ دیا گیا ہے۔ نتیجہ میں ایسے افراد شہر میں کسی بھی مقام پر ہوں ان کی تمام نقل و حرکت کو سی سی کیمرے ریکارڈ کرکے کمانڈ کنٹرول میں موجود کمپیوٹرس کی اسکرین پر دکھائی دیتے ہیں جس کی وجہ سے پولیس عملہ فوری حرکت میں آتا ہے۔ پولیس نے شہر میں میگا پکسل کیمروں کی تنصیب کا فیصلہ کیا ہے جس کے ذریعہ کم از کم 64 فریمس میں حالات واضح نظر آئیں گے اور ایسے کیمرے شہر کے 28 اہم جنکشنس پر لگائے جانے والے ہیں اور ان کیمروں کے ذریعہ ان مقامات پر موجود گاڑیوں افراد اور حالات کو محفوظ کیا جاسکتا ہے۔
ملکی سطح پر حیدرآباد اول نمبر پر
سی سی کیمروں کی تنصیب میں شہر حیدرآباد سارے ملک میں اول نمبر پر ہے جون 2014ء سے امسال جون تک شہر میں 1.8 لاکھ سی سی کیمرے نصب کئے گئے ہیں جن میں 1.6 لاکھ کیمرے عوام اور تجارتی اداروں نے اپنے اپنے علاقوں میں لگائے ہیں اور یہ تمام کیمرے مقامی پولیس اسٹیشن سے مربوط ہوتے ہیں۔ بقیہ 20 ہزار کیمروں کو محکمہ پولیس نے سرکاری فنڈس سے نصب کئے ہیں۔ ملک میں حیدرآباد کے بعد ممبئی میں زیادہ کیمرے یعنی 6 ہزار لگائے گئے ہیں۔ بعدازاں ملک کے دیگر میٹرو شہروں کے نمبر آتے ہیں۔ عظیم بلدیہ حیدرآباد کا احاطہ 625 کیلو میٹر پر محیط ہے جبکہ اس کی آبادی 1,00,00,000 کروڑ پر مشتمل ہے اور گریٹر کے احاطہ میں 1.8 لاکھ کیمرے ہوں گے یعنی ہر 55 افراد کیلئے ایک سی سی کیمرہ ہوگا اور ہر ایک کیلو میٹر پر 288 کیمرے ہوں گے۔
عالمی سطح پر کونسے شہر میں کتنے کیمرے ہیں؟
حیدرآباد 1.8 لاکھ، ممبئی 6 ہزار، دہلی 4,074، بنگلور 1,100، کولکاتہ 1000، چینائی 500، نیویارک 1.5 لاکھ، شکاگو 1.7 لاکھ، لندن 4.2 لاکھ، بیجنگ 4.7 لاکھ

TOPPOPULARRECENT