Sunday , January 21 2018
Home / مذہبی صفحہ / عقائد کا بیان

عقائد کا بیان

اٰمَنْتُ بِاللّٰہِ : اللہ پر ایمان لانے کابیان ۱۔ اللہ تعالیٰ اپنی ذات و صفات و افعال میں یکتا ہے ‘ کوئی اس کا شریک نہیں ۔ ۲۔ وہ اپنی ذات سے آپ موجود ہے ۔ (یہ نہیں کہ کسی نے اس کو موجود کیا ہو) ۳۔ قدیم ہے یعنی ہمیشہ سے ہے اور ہمیشہ رہے گا ۔

اٰمَنْتُ بِاللّٰہِ : اللہ پر ایمان لانے کابیان
۱۔ اللہ تعالیٰ اپنی ذات و صفات و افعال میں یکتا ہے ‘ کوئی اس کا شریک نہیں ۔
۲۔ وہ اپنی ذات سے آپ موجود ہے ۔ (یہ نہیں کہ کسی نے اس کو موجود کیا ہو)
۳۔ قدیم ہے یعنی ہمیشہ سے ہے اور ہمیشہ رہے گا ۔
۴۔ اس کے جتنے اسماء و صفات ہیں سب قدیم اور اس کی ذات میں ہمیشہ سے موجود ہیں اور ہمیشہ رہیں گی ۔
۵ ۔ اس کی ابتداء ہے نہ انتہاء ۔ وہی اول اور وہی آخر ہے ۔ وہی ظاہر اور وہی باطن ۔
۶ ۔ اس کے سواء جو کچھ موجود ہے سب نوپیدا اور اسی کا پیدا کیا ہوا ہے اور وہی سب کو فنا کر کے پھر دوبارہ مردوں کو قیامت میں زندہ کرنے والا ۔
۷ ۔ وہی ساری مخلوقات کا روزی رساں ہے ۔
۸ ۔ وہ کسی کا محتاج نہیں ساری دنیا اس کی محتاج ہے ۔
۹ ۔ وہ سب سے نرالا ہے کوئی اس کا مثل و مانند نہیں ۔
۱۰۔ اس کے ماں ‘ باپ ‘ جورو ‘ بیٹا ‘ بیٹی کوئی نہیں۔
۱۱ ۔ وہ جسم اور صفات جسم (کھانے ‘ پینے ‘ سونے وغیرہ ) سے پاک ہے ۔
۱۲۔ وہ زندہ ہے مگر ہماری طرح اس کی شکل و صورت نہیں ۔
۱۳۔ وہ ہرچیز کو دیکھتا ہے لیکن ہماری طرح اس کی آنکھ نہیں ۔
۱۴ ۔ وہ ہر آواز کو سنتا ہے مگر ہماری طرح اس کے کان نہیں ۔
۱۵۔ وہ کلام فرماتا ہے لیکن ہماری طرح اس کا منہ نہیں ۔
۱۶۔ ہر چیز پر اس کو قدرت ہے جو چاہتا ہے کرتا ہے ۔
۱۷۔ ہر چیز اس کے ارادہ سے ہوتی ہے اور کوئی اس کے ارادہ کو روک نہیں سکتا ۔
۱۸۔ ہر چیز کا اس کو علم ہے (خواہ دلوں کے اندر ہو یا زمین کے نیچے یا جہاں کہیں ) ۔
۱۹ ۔ وہی جِلاتا ‘ وہی مارتا ‘ وہی بیمار بناتا ‘ وہی شفا ء دیتا ہے ۔
۲۰۔ وہی عزت و ذلت دیتا اور وہی نفع و نقصان پہنچاتا ہے ۔
۲۱۔ اس کا کوئی کام حکمت سے خالی نہیں ۔
۲۲۔ وہ سب کامالک و نگہبان اور سب بادشاہوں کا بادشاہ ہے ۔
۲۳ ۔ وہ تمام خوبیوں اور کمال کی صفتوں سے موصوف اور زوال کی علامتوں اور کل عیبوں سے پاک ہے ۔
۲۴۔ پرستش و عبادت کا مستحق صرف وہی ایک ہے ۔ (جل جلالہ )
{اخذ: نصاب اہل خدمات شرعیہ}

TOPPOPULARRECENT