Tuesday , August 21 2018
Home / Top Stories / علاقائی صیانتی نظام کو ہندوستان کی تائید ، آسیان سے وزیراعظم کا خطاب

علاقائی صیانتی نظام کو ہندوستان کی تائید ، آسیان سے وزیراعظم کا خطاب

منیلا 14 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج قواعد پر مبنی علاقائی صیانتی نظام ہند ۔ بحرالکاحل علاقہ میں قائم کرنے کی پرزور تائید کی ۔ انہوں نے واضح طور پر دفاعی مفادات کے مرتکز کرنے کی ضرورت پر زور دیا ۔ اور کہا کہ بڑی عالمی طاقتوں اور ہندوستان کے ہاتھوں میں یہ نظام ہونا چاہئیے ۔ اس طرح انہوں نے چین کو واضح الفاظ میں فوجی جارحیت کے خلاف پیغام دیا جو چین اس علاقے میں کررہا ہے ۔ آسیان ۔ ہندوستان اور مشرقی ایشیاء کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم مودی نے دہشت گردی اور انتہاپسندی کا بھی تذکرہ کیا ۔ ان کی تقریر میں سرحد پار دہشت گردی کا حوالہ بھی تھا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ اس علاقہ کا ایک بڑی چیالنج ہے ۔ اب وقت آگیا ہے کہ تمام ممالک متحد ہوکر اجتماعی طور پر اس سے نمٹیں ۔ مودی نے دہشت گردی اور بنیاد پرستی پر قابو پانے کیلئے متحدہ رویہ پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ایک طویل عرصہ سے یہی موقف رکھتا ہے کہ بحری جہاز رہانی کی اور طیاروں کے پرواز کی ایشیائے کوچک کے علاقے میں آزادی ہونا چاہئیے ۔ انہوں نے کہا کہ اس علاقے کو نیوکلیر ہتھیاروں سے پاک کردینا ضروری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شمالی کوریا کی نیوکلیر پھیلاؤ کی پالیسی اور اس کے روابط کے بارے میں تفصیلی تحقیقات ضروری ہے ۔

ہندوستان نے آسیان کو تیقن دیا کہ اس کی مسلسل تائید اس تنظیم کو حاصل رہے گی ۔ اور قواعد پر مبنی صیانتی نظام کے قیام سے علاقائی مفادات کی تکمیل ہوگی ۔اور پرامن ترقی ممکن ہوسکے گی ۔ ان کے تبصرے کو ہندوستان کی اس تیاری کے طور پر دیکھا جارہا ہے جو وہ علاقائی صیانتی چوکھٹیں میں عظیم تر کردار ادا کرنے کا ارادہ رکھتا ہے ۔ دیگر ممالک میں جو ایشیائے کوچک میں اجارہ داری قائم کرنا چاہتے ہیں چین بھی شامل ہے ۔ دہشت گردی کے بارے میں اپنی سنجیدگی کی عکاسی کرتے ہوئے آسیان ممالک اور دیگر 9 بڑے ممالک بشمول امریکہ ، ہندوستان ، روس ، چین اور جاپان نے رقموں کی غیرقانونی منتقلی اور دہشت گرد تنظیموںکو مالیہ فراہم کرنے کے خلاف جنگ کے بارے میں علحدہ علحدہ اعلامیہ جاری کئے ۔ جن میں کہا گیا ہے کہ دہشت گردی اس علاقے کے تمام
ممالک کو مشترکہ طور پر درپیش نظریاتی چیالنج ہے ۔ آسیان ممالک کے اعلامیہ میں عہد کیا گیا ہے کہ دہشت نٹ ورک کے چیالنج سے متحدہ طور پر نمٹا جائے گا ۔ وزارت خارجہ کی ترجمان پریتی سارن نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ مودی نے بین الاقوامی ذمہ داریوں کی تکمیل کیلئے قانون کی حکمرانی کی ضرورت پر زور دیا ۔

TOPPOPULARRECENT