Tuesday , September 18 2018
Home / شہر کی خبریں / علامہ اعجاز فرخ کی بیش بہا تصنیف ’’ مرقع حیدرآباد ‘‘ کی اشاعت

علامہ اعجاز فرخ کی بیش بہا تصنیف ’’ مرقع حیدرآباد ‘‘ کی اشاعت

حیدرآباد ۔ 5 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد کی تہذیب و ثقافت صدیوں سے پروقار روایات کی حامل رہی ہے ۔ اگرچہ کہ لکھنؤ کی تہذیب کے چرچے زبان زد خاص و عام ہیں لیکن جس وقت حیدرآبادی تہذیب اپنے بام عروج پر تھی اس وقت لکھنؤ اپنے ابتدائی دور میں تھا ۔ دہلی کی تہذیبی تاریخ کو محفوظ کرنے کے لیے اگر محمد حسین آزاد ، رازق الخیری ، ڈپٹی نذیر احمد

حیدرآباد ۔ 5 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد کی تہذیب و ثقافت صدیوں سے پروقار روایات کی حامل رہی ہے ۔ اگرچہ کہ لکھنؤ کی تہذیب کے چرچے زبان زد خاص و عام ہیں لیکن جس وقت حیدرآبادی تہذیب اپنے بام عروج پر تھی اس وقت لکھنؤ اپنے ابتدائی دور میں تھا ۔ دہلی کی تہذیبی تاریخ کو محفوظ کرنے کے لیے اگر محمد حسین آزاد ، رازق الخیری ، ڈپٹی نذیر احمد نے اپنی تصانیف سے محفوظ کیا تو لکھنؤ کی مرصع تہذیب کے تحفظ میں عبدالحلیم شرر ، جعفر علی خاں اثر ، قرۃ العین حیدر نے اپنا حق ادا کیا ۔ حیدرآباد کی تہذیبی تاریخ کو محفوظ کرنے کے لیے جس کاوش کی ضرورت تھی شاید وہ خاطر خواہ نہ ہوسکی ۔ دیر سے سہی علامہ اعجاز فرخ نے یہ بیڑہ اٹھایا چنانچہ ان کی کتاب ’’ حیدرآباد شہر نگاراں ‘‘ کو اس کا نقطۂ آغاز کہا جاسکتا ہے ۔ لیکن ’’ مرقع حیدرآباد ‘‘ کو انہوں نے جس محنت ، جانفشانی اور جستجو سے لکھا یہ ایک دستاویزی شکل اختیار کر گیا ، اسے بلا شبہ اب تک کی قیمتی کتاب کا درجہ حاصل ہے ۔ علامہ اعجاز فرخ کی یہ بیش بہا تصنیف اشاعتی مراحل میں داخل ہوچکی ہے ۔ ادارہ سیاست کی سابقہ اشاعتوں کی طرح یہ کتاب بھی 11×8.1/2 انچ کے امپوٹیڈ آرٹ پیپر پر شائع ہوگی ۔ قارئین کی سہولت کے لیے اسے دو حصوں میں شائع کیا جارہا ہے ۔ پہلا حصہ قطب شاہی دور سے میر محبوب علی خاں آصف سادس کے عہد پر مشتمل ہے ۔ اس کی ضخامت 384 صفحات ہوگی جس میں تقریبا 250 تصاویر شامل رہیں گی ۔ دوسرا حصہ میر عثمان علی خاں آصف سابع سے اکتوبر 1956 تک مشتمل ہوگا ۔ جو اس کے بعد شائع ہوگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT