Sunday , September 23 2018
Home / ہندوستان / علحدہ ریاست ودربھا کے مطالبہ کو عوام کی تائید حاصل نہیں: شیوسینا

علحدہ ریاست ودربھا کے مطالبہ کو عوام کی تائید حاصل نہیں: شیوسینا

ممبئی۔/14اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) شیو سینا نے آج ایک بار پھر مہاراشٹرا سے ایک علحدہ ریاست ودربھا کے قیام کے مطالبہ کی زبردست مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ علحدہ ریاست ودربھا کے مطالبہ میں اب وہ شدت اور جان باقی نہیں رہی اور وہ لوگ جو علحدہ ریاست کا مطالبہ کررہے ہیں وہ ملک کو ٹکڑے ٹکڑے کردینے کے بدخواہ ہیں۔ ماقبل انتخابات کئی زیر التواء معامل

ممبئی۔/14اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) شیو سینا نے آج ایک بار پھر مہاراشٹرا سے ایک علحدہ ریاست ودربھا کے قیام کے مطالبہ کی زبردست مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ علحدہ ریاست ودربھا کے مطالبہ میں اب وہ شدت اور جان باقی نہیں رہی اور وہ لوگ جو علحدہ ریاست کا مطالبہ کررہے ہیں وہ ملک کو ٹکڑے ٹکڑے کردینے کے بدخواہ ہیں۔ ماقبل انتخابات کئی زیر التواء معاملات کو اٹھایا جاتا ہے جن میں ایک مطالبہ علحدہ وردبھا ریاست کا بھی ہے۔

پارٹی ترجمان ’سامنا‘ کے اداریہ میں تحریر کرتے ہوئے شیوسینا نے کہا کہ علحدہ ودربھا کے مطالبہ کو اب عوام کی تائید حاصل نہیں ہے اور جو لوگ بھی ایسا کررہے ہیں وہ محض میڈیا کی توجہ اور سستی شہرت کے لئے کررہے ہیں۔ نتن گڈکری اب مرکزی وزیر ہیں اور ان کا بھی کافی وزن ( دبدبہ ) ہے اور وہ ودربھا کی ترقی کیلئے ہر ممکنہ اقدامات کرسکتے ہیں۔ اداریہ میں اس احتجاجی مارچ کابھی تذکرہ کیا گیا ہے جو علحدہ ودربھا ریاست کا مطالبہ کرنے والوں نے ناگپور میں گڈکری کی رہائش گاہ کے قریب منظم کی تھی۔ یہ ایک متحدہ مراٹھی ریاست ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ اس کا موقف یوں ہی برقرار رہے۔ ریاست آندھرا پردیش سے ریاست تلنگانہ کو علحدہ کیا گیا۔ کیا تلنگانہ خوشیوں کا بول بالا ہے؟

تلنگانہ کے وزیر اعلیٰ کی بیٹی نے کہا ہے کہ تلنگانہ اور کشمیر دو آزاد ریاستیں ہیں جنہیں جبری طور پر ہندوستان میں شامل کیا گیا۔ لہذا ایسے عناصر کو کچل دینے کی ضرورت ہے جو ریاستوں کے ٹکڑے کرنے پر مصر ہیں کیونکہ ریاستوں کے ٹکڑے کرنا ملک کے ٹکڑے کرنے کے مترادف ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہے کہ صرف دو روز قبل مہاراشٹرا کے نائب وزیر اعلیٰ اور این سی پی کے اہم لیڈر اجیت پوار نے ودربھا پر حلیف جماعتوں بی جے پی اور شیوسینا میں اختلاف رائے کے بارے میں بیان دیا تھا۔ انہوں نے ادعا کیا تھا کہ ریاست کے ایسے کئی معاملات ہیں بشمول علحدہ ریاست ودربھا کا قیام جہاں شیوسینا اور بی جے پی میں اتفاق رائے کا فقدان ہے اور اگر ریاست میں دونوں پارٹی کے اتحاد نے اقتدار حاصل کیا تو صورت حال اُلجھن کا شکار ہوجائے گی۔

TOPPOPULARRECENT