Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / علیحدگی پسند لیڈر شبیر شاہ عدالتی تحویل میں 2005ء دہشت گردوں کو فنڈنگ مقدمہ میں عدالت کی کارروائی

علیحدگی پسند لیڈر شبیر شاہ عدالتی تحویل میں 2005ء دہشت گردوں کو فنڈنگ مقدمہ میں عدالت کی کارروائی

 

نئی دہلی۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کی عدالت نے کشمیری علیحدگی پسند لیڈر شبیر شاہ کو 14 دن کیلئے عدالتی تحویل میں دے دیا۔ انہیں دہشت گردوں کو مبینہ طور پر مالیہ کی فراہمی کے سلسلے میں تقریباً ایک دہا قدیم مقدمہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔ ایڈیشنل سیشن جج سدھارتھ شرما نے ملزم کو اُس وقت جیل بھیج دیا جبکہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے کہا کہ انہیں تحویل میں لے کر مزید تفتیش کی ضرورت ہے۔ قبل ازیں 3 اگست کو عدالت نے شبیر شاہ کو انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی تحویل میں دیا تھا۔ اس وقت ایجنسی نے کہا تھا کہ دہشت گردوں کو فنڈس کیلئے رقم استعمال کرتے ہوئے شبیر شاہ ملک کو تباہ کررہے ہیں۔ ان کی گرفتاری اس وقت عمل میں آئی جبکہ این آئی اے نے وادی میں دہشت گردوں کو مبینہ طور پر فنڈس کی فراہمی اور بدامنی پیدا کرنے سے متعلق مقدمہ میں کئی حریت قائدین کو تحویل میں لیا تھا۔ شبیر شاہ کو اس مقدمہ میں اگست 2005ء میں تحویل میں لیا گیا تھا۔ ان کے علاوہ دہلی پولیس کے اسپیشل سیل نے 35 سالہ اسلم وانی کو گرفتار کیا جو مبینہ طور پر حوالہ ڈیلر ہیں اور اس وقت وہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی تحویل میں ہیں۔ ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ وانی کے پاس سے 63 لاکھ روپئے برآمد ہوئے جن میں 52 لاکھ روپئے مبینہ طور پر شبیر شاہ کے حوالے کئے گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT