Monday , November 19 2018
Home / Top Stories / علیم الدین انصاری کی ہلاکت میں ملوث 11 گاؤ دہشت گردوں کو عمر قید

علیم الدین انصاری کی ہلاکت میں ملوث 11 گاؤ دہشت گردوں کو عمر قید

رانچی ۔ 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) جھارکھنڈ میں گاؤدہشت گردوں کے ہاتھوں ایک مسلم شخص علیم الدین انصاری کو بے رحمانہ انداز میں مارپیٹ کے ذریعہ ہلاک کئے جانے کے9 ماہ بعد رام گڑھ کی ایک عدالت نے اس مقدمہ کے 11 مجرمین کو عمرقید دی ہے۔ مقدمہ کی سرعت انگیز سماعت کرنے والی اس عدالت نے چند دن قبل 12 کے منجملہ 11 ملزمین کو جرم کا مرتکب قرار دی تھی جن میں ضلع بی جے پی کا ایک لیڈر اور مقامی گاؤرکھشا سمیتی کے تین ارکان بھی شامل ہیں۔ استغاثہ نے مجرمین کو زیادہ سے زیادہ سزاء دینے کی درخواست کی تھی جبکہ وکیل صفائی نے اس بنیاد پر نرمی کی استدعا کی تھی کہ ملزمین پہلی مرتبہ کسی فوجداری مقدمہ میں ملوث ہوئے ہیں۔ عدالت نے ضلعی قانونی خدمات کی اتھاریٹی کو ہدایت کی کہ متاثرین کیلئے خاطرخواہ معاوضہ کی ادائیگی کو بھی یقینی بنایا جائے۔ اس دوران علیم الدین انصاری کے ارکان خاندان نے کہا کہ عدالتی فیصلہ پر وہ مطمئن ہیں اور معاوضہ چاہتے ہیں کیونکہ علیم الدین ہی اس خاندان کیلئے روزگار اورکفالت کرنے والے واحد شخص تھے۔ گاؤرکھشا کے نام پر قانون ہاتھ میں لینے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے کئے گئے برسرعام اعلان کے ایک دن بعد یعنی 29 جون 2017ء کو 55 سالہ علیم الدین انصاری کو گاؤ رکھکشوں نے بے رحمانہ زدوکوب میں ہلاک کردیا تھا۔ جھارکھنڈ کی حکومت نے اس کے مقدمہ کو سریع السماعت عدالت سے رجوع کیا تھا اور ایڈیشنل جج II اوم پرکاش تقریباً روزانہ بنیاد پر اس کی سماعت کررہے تھے۔

TOPPOPULARRECENT