Monday , November 20 2017
Home / ہندوستان / علیگڈھ یونیورسٹی میں ’ بیف بریانی ‘ کی اطلاع پر تنازعہ

علیگڈھ یونیورسٹی میں ’ بیف بریانی ‘ کی اطلاع پر تنازعہ

علیگڈھ 20 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) اپنے اقلیتی کردار کو برقرار رکھنے کے مسئلہ پر جدوجہد کا شکار علیگڈھ مسلم یونیورسٹی میں آج پھر ایک تنازعہ پیدا ہوگیا ۔ اب یہ تنازعہ بیف کے مسئلہ پر ہوا ہے ۔ یہ مسئلہ سوشیل میڈیا پر کل اس وقت پیدا ہوا جب واٹس اپ پر ایک پوسٹ پیش کیا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی کے میڈیکل کالج کینٹین میں بیف بریانی فراہم کی جا رہی ہے ۔ یونیورسٹی نے تاہم فوری اس رپورٹ کی تردید کی ہے ۔ رپورٹس میں یہ تاثر دیا جا رہا تھا کہ بریانی میں گائے کا گوشت استعمال کیا گیا ہے بیل کا نہیں ۔ سوشیل میڈیا پر کینٹین کے مینو کارڈ کی تصویر کو  بھی پیش کیا گیا تھا ۔ بی جے پی کی مئیر شکنتلا بھارتی نے پارٹی قائدین اور کئی دائیں بازو کارکنوں کے ساتھ آج سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس کے دفتر کے روبرو مظاہرہ کیا اور مطالبہ کیا کہ میڈیکل کالج کینٹین کے کنٹراکٹر کے خلاف بیف بریانی فراہم کرنے پر مقدمہ درج کیا جائے ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس مسئلہ پر ابھی تحقیقات جاری ہیں۔ جیسے ہی یہ اطلاعات پھیلنے لگیں یونیورسٹی کے حکام یونیورسٹی پراکٹر ایم محسن خان کی قیادت میں میڈیکل کالج کینٹین پہونچ گئے اور انہوںنے برسر موقع جائزہ لیا ۔ یونیورسٹی کے ترجمان راحب ابرار نے الزام عائد کیا کہ یہ واقعہ در اصل ادارہ کو بدنام کرنے کی ناپاک کوشش ہے ۔ مینو میں جس بیف کا تذکرہ کیا گیا ہے وہ بیل کا گوشت تھا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ صرف ادارہ کو بدنام اور رسوا کرنے کی سازش ہے ۔ وہ پورے یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ مینو میں جس بیف بریانی کا تذکرہ کیا گیا ہے وہ بیل کے گوشت کی ہے گائے کے گوشت کی نہیں۔

TOPPOPULARRECENT