Sunday , January 21 2018
Home / ہندوستان / علیگڑھ کے قریب ایک قصبہ میں فرقہ وارانہ کشیدگی

علیگڑھ کے قریب ایک قصبہ میں فرقہ وارانہ کشیدگی

تبدیلی مذہب کی شکایت پر تبلیغی کارکن گرفتار

تبدیلی مذہب کی شکایت پر تبلیغی کارکن گرفتار
لکھنو ۔ 20 ۔ اپریل (سیاست ڈاٹ کام) علیگڑھ کے قریب ایک چھوٹے قصبہ میں اس وقت فرقہ وارانہ کشیدگی پھیل گئی جب بجرنگ دل ارکان نے الزام عائد کیا کہ نصف درجن مبلغین کے ایک گروپ نے دریہاتویں کے تبدیلی مذہب کی کوشش کی۔ بجرنگ دل ارکن اور دیگر دائیں بازو پارٹیوں کے قائدین نے الزام عائد کیا کہ مبلغین کا ایک گروپ دیہاتیوں کا مذہب تبدیل کروانے کیلئے اس گاؤں کا چکر لگارہا ہے۔ تاہم پولیس نے بتایا کہ بادی النظر میں تبدیلی مذہب کے الزامات جھوٹے ثابت ہوئے کیونکہ اس گاؤں میں مسلمانوں کی کوئی آبادی نہیں ہے۔ تاہم ایک 75 سالہ دیہاتی سورج پال جو کہ کنجرا ذات سے تعلق رکھتے ہیں جن کے مکان میں یہ گروپ ٹھہرا ہوا تھا ۔ بتایا گیا کہ یہ مذہبی قائدین اکثر و بیشتر ہمارے گاؤں آتے ہیں اور ہفتہ کو جب یہ لوگ پیاسے ہوگئے تھے میں نے انہیں ، میں نے انہیں پانی دیا چونکہ اس وقت نماز کا وقت آن پہنچتا ، ان لوگوں نے نماز ادا کرنے کی اجازت طلب کی جس پر میں انکار نہیں کرسکا۔ سورج پال نے بتایا کہ مبلغین کا دورہ تبدیل مذہب کوئی تعلق نہیں رکھتا اور ایک عرصہ دراز سے ان لوگوں سے جانا پہچانا ہے۔سورج پال نے مزید کہا کہ کنجر برادری کا کسی مذہب سے تعلق نہیں ہے اور ہم دیوالی کے موقع پر سبزی پوری اور عید پر سیویاں کھاتے ہیں۔ تاہم پولیس نے 7 تبلیغی کارکنوں کے خلاف ایف آر آر درج کرلیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT