Wednesday , July 18 2018
Home / ہندوستان / عنقریب 20 لاکھ روپئے گریجویٹی جس پر ٹیکس نہیں

عنقریب 20 لاکھ روپئے گریجویٹی جس پر ٹیکس نہیں

منظم شعبہ کے کارکنوں کو 5سال کے بعد سبکدوشی کی اجازت ، اعظم ترین حد 10 لاکھ روپئے مقرر

نئی دہلی ۔ 15 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) گریجویٹی کی ادائیگی (ترمیمی) مسودہ قانون 2017ء امکان ہیکہ آئندہ بجٹ اجلاس میں منظور کردیا جائے جس سے حسب معمول شعبہ کے کارکن 20 لاکھ روپئے گریجویٹی کی رقم کے مستحق ہوجائیں گے جس پر انہیں ٹیکس ادا کرنا بھی نہیں ہوگا۔ فی الحال معمول کے شعبہ کے کارکن انہیں 5 یا 5 سے زیادہ سال کی سرویس کرچکے ہیں۔ وہ 10 لاکھ روپئے گریجویٹی کے رقم کے مستحق ہوں گے جس پر کوئی ٹیکس ادا کرنا نہیں ہوگا۔ خدمات سے سبکدوشی پر یہ رقم ادا کی جائے گی۔ گریجویٹی کی رقم (ترمیمی) قانون 2017ء آئندہ پارلیمنٹ کے بجٹ اجلاس میں توقع ہیکہ منظور کردیا جائے گا اور جاریہ ماہ کے اواخر سے اس پر عمل درآمد شروع ہوجائے گا۔ حکومت سے قربت رکھنے والے ایک ذریعہ کے بموجب حکومت چاہتی ہیکہ 20 لاکھ روپئے گریجویٹی منظم شعبہ کے کارکنوں کو مرکزی حکومت کے مساوی ادا کی جائے۔ یہ قانون لوک سبھا کے سرمائی اجلاس میں پیش کیا جانے والا تھا جسے گذشتہ ماہ روک دیا گیا۔ یہ مسودہ قانون حکومت کو اعلان کرنے کی ہدایت دیتا ہیکہ وہ میٹرنیٹی رخصت کی مدت سے گریجویٹی کو متاثر نہ ہونے دے۔ اس سے ملازمین مرکزی قانون کے مطابق استفادہ کرسکیں۔ گریجویٹی سے متعلق رقم کا شمار جس فارمولہ کے تحت کیا جائے گا وہ ہر سال کی خدمت کیلئے 15 دن کے مساوی اجرت ہوگی بشرطیکہ اس کی آخری حد 10 لاکھ روپئے ہونا چاہئے۔ ساتویں مرکزی پے کمیشن کے نفاذ کے بعد گریجویٹی کی رقم کی حد مرکزی حکومت کے ملازمین کیلئے اضافہ کرکے 10 لاکھ سے 20 لاکھ روپئے کی گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT