Saturday , September 22 2018
Home / سیاسیات / عوام نے بی جے پی کو ہندوراشٹر بنانے کیلئے ووٹ نہیں دیا

عوام نے بی جے پی کو ہندوراشٹر بنانے کیلئے ووٹ نہیں دیا

چینائی ۔ 22 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام)مرکز میں برسراقتدار این ڈی اے میں شامل ایک حلیف جماعت پی ایم کے نے مذہبی تبدیلی و دوبارہ تبدیلی کے مسئلہ پر ہندوتوا اور اس کی حامی تنظیموں کی سخت مذمت کی اور کہا کہ عوام نے ہندوستان کو ایک ہندو مملکت بنانے کیلئے نہیں بلکہ ملک میں اقتصادی ترقی کیلئے کام کرنے کیلئے غیرمعمولی طور پر بی جے پی کو بھاری اکثر

چینائی ۔ 22 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام)مرکز میں برسراقتدار این ڈی اے میں شامل ایک حلیف جماعت پی ایم کے نے مذہبی تبدیلی و دوبارہ تبدیلی کے مسئلہ پر ہندوتوا اور اس کی حامی تنظیموں کی سخت مذمت کی اور کہا کہ عوام نے ہندوستان کو ایک ہندو مملکت بنانے کیلئے نہیں بلکہ ملک میں اقتصادی ترقی کیلئے کام کرنے کیلئے غیرمعمولی طور پر بی جے پی کو بھاری اکثریت سے کامیاب بنایا تھا۔ پی ایم کے کے بانی ایس رام داس نے مرکز سے مطالبہ کیا کہ وہ محض اپنے نجی ایجنڈہ کو فروغ دینے کے بجائے ان تمام مسائل پر توجہ مرکوز کرے جو عام آدمی سے تعلق رکھتے ہیں۔ رام داس نے 25 نومبر کو عیسائی تہوار ’’کرسمس‘‘ کے دن ’’یوم بہتر حکمرانی‘‘ کے طور پر منانے مرکز کے فیصلے کی سخت مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ ایک طرف سنگھ پریوار میں شامل ہندوتوا تنظیمیں ’دوبارہ مذہبی تبدیلی‘ کا دعویٰ کرتے ہوئے ’ گھر واپسی‘ مہم چلا رہی ہیں ، دوسری طرف آر ایس ایس جبری مذہبی تبدیلی کیلئے قانون وضع کرنے کا مطالبہ کررہی ہے اور حکومت اپنا ایجنڈہ فروغ دینے میں مصروف ہے۔رام داس نے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ یہ دراصل ہندوستان کو ’’ہندو راشٹر‘‘ بنانے کی تیاری کے اقدامات ہیں اور ایسی سرگرمیاں ملک کی سیکولرازم اور ہمہ تہذیبی معاشرے کے مغائر ہیں۔ رام داس نے کہا کہ ہندوستان پہلے ہی بابری مسجد کی انہدامی کی بھاری قیمت ادا کرچکا ہے ۔ انہوں نے سنگھ پریوار کی سرگرمیوں پر حکمران(مرکز) خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں جو انتہائی تشویشناک ہے۔

TOPPOPULARRECENT