Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / عوام کو24 گھنٹے برقی سربراہی یقینی بنانے اقدامات

عوام کو24 گھنٹے برقی سربراہی یقینی بنانے اقدامات

 

سوریہ پیٹ میں 400-KV سب اسٹیشن کا آج افتتاح،سدی پیٹ ، سرسلہ میں کلکٹریٹس کیلئے سنگ بنیاد
٭ سدی پیٹ میری جنم بھومی، تلنگانہ کا نمبر ایک ضلع ہوگا
٭چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کاجلسہ عام سے خطاب

حیدرآباد۔/11اکٹوبر، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ مستقبل میں بڑھتی طلب کو پورا کرنے کیلئے 24 گھنٹے برقی سربراہی کو یقینی بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ وہ سوریہ پیٹ کے چیوملہ مقام کے مضافات میں 1600 کروڑ کی لاگت سے قائم کردہ 400-KV برقی سب اسٹیشن کا کل رسمی افتتاح کریں گے۔ آج ٹی ایس جینکو، ٹرانسکو، سی ایم ڈی، ڈی پربھاکرراؤ سے بات چیت کرتے ہوئے چیف منسٹر نے ریاست میں برقی سربراہی اور پیداوار کی صورتحال کا جائزہ لیا۔ پربھاکر راؤ نے چیف منسٹر کو بتایا کہ زرعی شعبہ کو 24گھنٹے برقی سربراہی کیلئے مساعی جاری ہے ۔12610 کروڑ کی لاگت سے برقی سربراہی کو یقینی بنایا جائے گا۔ ریاست کی تشکیل کے پانچویں ماہ سے ہی 24 گھنٹے برقی سربراہی کو یقینی بنایا جارہا ہے۔ چیف منسٹر نے گزشتہ سال ہدایت دی تھی کہ برقی پیدا کرنے والی تنظیموں کو چاہیئے کہ وہ عوام کیلئے خاص کر کسانوں کو 24 گھنٹے برقی سربراہی کو یقینی بنائیں۔ چیف منسٹر نے آج اپنے ترقیاتی پروگراموں کے حصہ کے طور پر سدی پیٹ اور سرسلہ میں کلکٹریٹس کیلئے سنگ بنیاد رکھا۔ سدی پیٹ کے منڈل کونڈپکا میں پولیس کمشنریٹ ہیڈ کوارٹرس کا افتتاح کیا۔ وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ، ارکان پارلیمنٹ ونود کمار اور کوتہ پربھاکر ریڈی، ڈپٹی اسپیکر پدما دیویندر ریڈی بھی اس موقع پر موجود تھے۔ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے کہا کہ مغربی بنگال اور آندھرا پردیش کے سوا تمام دیگر ریاستوں نے نئے اضلاع قائم کئے ہیں تاکہ عوام کو بہتر نظم و نسق فراہم کیا جاسکے۔

حکومت تلنگانہ نے بھی 21 نئے اضلاع قائم کئے ہیں جس کے ذریعہ عوام کی بہتر خدمت کی جائے گی۔ یہ ایک جرأتمندانہ فیصلہ تھا، ملک میں کسی بھی چیف منسٹر نے ماضی میں اس طرح کا فیصلہ نہیں کیا ہے۔ چیف منسٹر کے سی آر نے اپنی حکومت کی جانب سے شروع کردہ مختلف اسکیمات کا ذکر کیا۔ بعد ازاں چیف منسٹر نے انسنا پلی موضع میں ایک میڈیکل کالج کیلئے سنگ بنیاد رکھا اور سدی پیٹ میں ڈبل بیڈ روم مکانات کیلئے جاری تعمیری کاموں کا بھی معائنہ کیا۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سدی پیٹ ریاست کا نمبر ایک ضلع ہوگاجہاں بہبودی اور ترقیات پر توجہ دیتے ہوئے عوام کو تمام سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔ چیف منسٹر نے ضلع سدی پیٹ کو اپنی جنم بھومی قرار دیاجس نے انہیں سیاسی طور پر جنم دیا ہے، یہیں سے وہ عوامی خدمت گذار بن کر اُبھرے ہیں۔ تلگودیشم کے بانی صدر آنجہانی این ٹی راما راؤ نے سدی پیٹ سے مقابلہ کرنے کیلئے ٹکٹ دیا تھا، میری یہ اولین ذمہ داری ہے کہ میں سدی پیٹ کو ریاست تلنگانہ کے نمبر ایک ضلع کے طور پر ترقی دوں۔اپنے آبائی مقام کیلئے بعض مراعات کا اعلان کرتے ہوئے چیف منسٹر نے کہا کہ وہ ڈبل بیڈ روم کے مزید 1000 مکانات کی تعمیر کیلئے منظوری دیتے ہیں۔نوتشکیل شدہ ریاست تلنگانہ ملک میں شرح پیداوار کی صف میں سب سے آگے ہے اس کی شرح پیداوار 21.7فیصد ریکارڈ کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT