Tuesday , November 13 2018
Home / شہر کی خبریں / عہدوں سے محروم ٹی آر ایس قائدین مایوس

عہدوں سے محروم ٹی آر ایس قائدین مایوس

کب تک میرے مولیٰ، بڑی دیر سے چپ ہوں
چار سال کا انتظار ، ناراضگی میں تبدیل،49 اداروں کے 500 عہدے خالی

حیدرآباد 10 اپریل (سیاست نیوز) ’’کب تک میرے مولیٰ۔میں آس کا بندہ ہوں بڑی دیر سے چپ ہوں‘‘ ٹی آر ایس قائدین ان دنوں اپنی مایوسی اور ناراضگی کا اظہار جس انداز سے کر رہے ہیں، اس پر یہ شعر صادق آتا ہے۔ گزشتہ چار برسوں سے حکومت کے نامزد عہدوں کا انتظار کر رہے ٹی آر ایس قائدین کو انتظار ہے کہ کبھی نہ کبھی چیف منسٹر ان کی بے چینی کو محسوس کرکے پارٹی سے وابستگی کا صلہ دیں گے۔ چیف منسٹر کے سی آر نے حکومت کی تشکیل کے ساتھ اعلان کیا تھا کہ تمام نامزد سرکاری عہدوں پر جلد تقررات کرکے تلنگانہ جدوجہد میں حصہ لینے والوں کے ساتھ انصاف کیا جائے گا۔ 2001 سے پارٹی سے وابستہ سینکڑوں نہیں بلکہ ہزاروں قائدین کو وعدہ کی تکمیل کا انتظار ہے ۔ روزانہ کسی نہ کسی طرح وزراء اور ارکان اسمبلی کے روبرو قائدین اپنی ناراضگی کا کھل کر اظہار کر رہے ہیں۔ انہیں یہ کہتے ہوئے تسلی دیدی جاتی ہے کہ بہت جلد تقررات کا اعلان کیا جائیگا۔ جب کبھی دسہرہ یا اگادی کا تہوار آتا ہے تو عہدوں کے خواہشمند چیف منسٹر سے امیدیں وابستہ کرتے ہیں کہ ان کے حق میں فیصلہ کیا جائے گا ۔ گزشتہ 4 برسوں میں کے سی آر نے 49 کارپوریشنوں کے صدور نشین کو نامزد کیا لیکن بیشتر کارپوریشنوں کے بورڈ آف ڈائرکٹرس کی بھرتی نہیں کی گئی۔ اس طرح بورڈ آف ڈائرکٹرس کے 500 سے زائد عہدے خالی ہیں ۔ وزراء ارکان پارلیمنٹ اور ارکان مقننہ سے چیف منسٹر نے ان کے انتخابی حلقوں کے سرگرم قائدین کی فہرست طلب کی تھی تاکہ نامزد عہدوں پر فائز کیا جاسکے۔ فہرست کی پیشکشی کو ایک سال مکمل ہوچکا ہے۔ لیکن آج تک چیف منسٹر نے فہرستوں کا جائزہ تک نہیں لیا۔ جن کارپوریشنوں پر تقررات کئے گئے ، ان کی میعاد 2 یا 3 سال کیلئے مقرر کی گئی تھی لہذا بعض صدورنشین اپنی میعاد مکمل کرچکے ہیں۔ گزشتہ سال جن کارپوریشنوں پر تقررات کئے گئے ، ان کا ایک سال مکمل ہوچکا ہے ( باقی سلسلہ صفحہ 7 پر )

TOPPOPULARRECENT