Saturday , December 15 2018

عیدگاہ خیریت آباد کی اراضی کا حصار بندی کے ذریعہ تحفظ

صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم کا دورہ، غیر مجاز قابضین کو کارروائی کا انتباہ
حیدرآباد۔10 ۔ جنوری (سیاست نیوز) صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے قدیم عیدگاہ مقطعہ مدار خیریت آباد کی اراضی کے تحفظ کے لئے وقف بورڈ کے ذریعہ حصار بندی کرانے کا اعلان کیا ہے محمد سلیم نے آج چیف اگزیکیٹیو آفیسر منان فاروقی اور عیدگاہ کمیٹی کے ذمہ داروں کے ہمراہ مقطعہ مدار کا دورہ کیا اور تیقن دیا کہ ہر صورت میں عیدگاہ کا تحفظ کیا جائے گا اور غیر مجاز قابضین کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ متحدہ آندھراپردیش میں حکومت نے عیدگاہ کیلئے 6171 مربع گز اراضی الاٹ کی تھی ۔ سروے نمبر 9 کے تحت یہ اراضی موجود ہے اور وقف گزٹ نمبر 40 مورخہ 14 فروری 2014 ء میں اس کی تفصیلات درج ہیں۔ ایک ایکر 11 گنٹے اس اراضی پر قابضین کی نظریں ہیں اور اس قیمتی اراضی پر گاڑیوں کی پارکنگ کرتے ہوئے آمدنی حاصل کی جارہی ہے۔ محمد سلیم نے اراضی کی مکمل حصار بندی اور عیدگاہ کی نگہداشت کیلئے فنڈس جاری کرنے کا تیقن دیا۔ پیوپلز پلازا نیکلس روڈ پر واقع اس قیمتی اراضی کو رات کے اوقات میں گاڑیوں کی پارکنگ کیلئے استعمال کیا جارہا ہے۔ پارکنگ کے ذریعہ بتدریج اراضی پر قبضہ کی نیت سے سرگرمیاں جاری ہیں۔ عیدگاہ کمیٹی نے اس سلسلہ میں صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم سے نمائندگی کی تھی اور انہوں نے آج شخصی طور پر معائنہ کیا اور کہا کہ عید گاہ کی حرمت کو پامال ہونے نہیں دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایک ایک انچ اراضی کا تحفظ کرتے ہوئے عیدگاہ تاقیامت برقرار رہے گی۔ محمد سلیم نے کہا کہ وقف بورڈ کی جانب سے حصاربندی کیلئے تخمینہ تیار کرنے چیف اگزیکیٹیو آفیسر کو ہدایت دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور ریونیو حکام سے تعاون حاصل کرتے ہوئے حصار بندی کی جائے گی ۔ انہوں نے مقامی افراد کو تیقن دیا کہ وہ اراضی کے بارے میں تشویش کا شکار نہ ہوں۔ مقامی افراد نے محمد سلیم کے اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے ان کے حق میں نعرے لگائے اور گلپوشی کی۔ قدیم عیدگاہ و چھلہ مبارک غوث اعظم کی کمیٹی کے ذمہ داروں نے محمد سلیم کو یادداشت پیش کی ۔ عیدگاہ کے کیر ٹیکر محمد کریم الدین نے یادداشت میں کہا کہ باؤنڈری وال کی تعمیر کے ذریعہ اراضی کا تحفظ کیا جاسکتا ہے۔ بعض غیر سماجی عناصر نہ صرف کچرا ڈال رہے ہیں بلکہ عیدگاہ کے احاطہ میں غیر قانونی سرگرمیاں انجام دی جارہی ہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں پولیس عہدیداروں سے نمائندگی کریں گے۔ پارکنگ مافیا اور لینڈ مافیا کی اس اراضی پر نظریں ہیں۔ چیف اگزیکیٹیو آفیسر منان فاروقی نے کہا کہ جلد از جلد تخمینہ تیار کرتے ہوئے حصار بندی کا کام شروع کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT