Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ اور مسجد عالم گیر خانم میٹ کی وقف اراضی قابضین پر فوجداری مقدمات

عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ اور مسجد عالم گیر خانم میٹ کی وقف اراضی قابضین پر فوجداری مقدمات

ریونیو اور پولیس کے ساتھ جائیدادوں کا دورہ ، چیرمین وقف بورڈ الحاج محمد سلیم
حیدرآباد۔10 اگست (سیاست نیوز) عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ اور مسجد عالم گیر خانم میٹ کی اوقافی اراضیات کے تحفظ کے سلسلہ میں صدرنشین وقف بورڈ نے غیر مجاز قابضین کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کرنے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے آج ریونیو اور پولیس کے اعلی عہدیداروں کے ہمراہ دونوں جائیدادوں کا دورہ کیا اور ریونیو حکام کو ہدایت دی کہ ان اراضیات کی حد بندی کی جائے تاکہ غیر مجاز قبضوں کو روکا جاسکے۔ جوائنٹ کلکٹر رنگاریڈی ایس سندر ابنار، ڈپٹی کمشنر پولیس ایس شیواپرساد، چیف ایگزیکٹیو آفیسر وقف بورڈ ایم اے منان فاروقی، متعلقہ تحصیلدار اور پولیس کے دیگر عہدیدار اس موقع پر موجود تھے۔ دونوں مقامات پر صدرنشین وقف بورڈ نے پولیس اور ریونیو حکام کے رویہ پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ وقف بورڈ سے شکایت کے باوجود ان محکمہ جات نے کوئی کارروائی نہیں کی۔ انہوں نے مسجد عالم گیر خانم میٹ کی 1000 گز اراضی پر ایک خاتون آئی اے ایس عہدیدار کی جانب سے تعمیری سرگرمیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بورڈ کی مداخلت کے باوجود تعمیری کام جاری ہے اور پولیس تماشائی بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں مسجد عالم گیر اور اس سے متعلق اوقافی اراضی کا مکمل ریکارڈ موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد کے تحفظ کے ساتھ ساتھ اراضی کا بھی تحفظ کیا جائے گا۔ اس موقع پر جوائنٹ کلکٹر رنگاریڈی نے وقف بورڈ اور خاتون آئی اے ایس عہدیدار کے پاس موجود ریکارڈ کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ خانم میٹ کے دورے کے بعد صدرنشین وقف بورڈ گٹلہ بیگم پیٹ پہنچے اور مسجد کے اطراف غیر مجاز قبضوں کا جائزہ لیا۔ 90 ایکڑ اوقافی اراضی پر کئی بڑے اداروں نے قبضہ کرلیا ہے اور بعض کمپنیوں کی جانب سے شیڈس کی تعمیر جاری ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے ایک شیڈ میں پہنچ کر تعمیری سرگرمیوں کو فوری روکنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے کہا کہ غیر مجاز قابضین وقف بورڈ پہنچ کر کرایہ دار بننے کا اظہار کررہے ہیں تو دوسری طرف غیر مجاز تعمیری سرگرمیاں جاری ہیں۔ اس موقع پر علاقہ کے بعض مشہور ریئل اسٹیٹ تاجر پہنچے جن کا اوقافی اراضی پر قبضہ ہے۔ مقامی افراد کی کثیر تعداد بھی جمع ہوگئی جنہوں نے اراضی کے بارے میں ریکارڈ کی موجودگی اور عدالتی احکامات کا حوالہ دیا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے کہا کہ عدالتی احکامات دراصل وقف بورڈ کے حق میں ہیں اور وہ کسی اور احکام کو نہیں جانتے۔ انہوں نے کہا کہ تعمیری سرگرمیوں کو نہ روکنے کی صورت میں انہیں منہدم کردیا جائے گا۔ محمد سلیم نے کہا کہ بنگلور میں اوقافی اراضی پر تعمیر کردہ فائیو اسٹار ہوٹل منہدم کردی گئی۔ لہٰذا تلنگانہ وقف بورڈ کو بھی غیر مجاز قبضوں پر تعمیر کے خلاف کارروائی کا حق حاصل ہے۔ مقامی افراد کے دعوئوں کو مسترد کرتے ہوئے صدرنشین وقف بورڈ نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ قابضین کے خلاف کارروائی کا آغاز کریں۔ 18 یا 19 اگست کو کلکٹر رنگاریڈی کی جانب سے اجلاس طلب کیا جائے گا جس میں وقف بورڈ اور ریونیو ریکارڈ کا جائزہ لیتے ہوئے اوقافی اراضیات کے تحفظ کی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔ گٹلہ بیگم پیٹ اور مسجد عالم گیر کی اراضیات سے متعلق وقف ریکارڈ اس اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT