Wednesday , January 17 2018
Home / ہندوستان / غذئی اشیاء کی مہنگائی سے مارچ میں افراط زر 9.9 فیصد ہوگیا

غذئی اشیاء کی مہنگائی سے مارچ میں افراط زر 9.9 فیصد ہوگیا

نئی دہلی 15 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) انحطاط پذیر رجحان تبدیل ہوگیا ہے افراط زر گذشتہ تین ماہ میں سب سے زیادہ بلند سطح 9.9فیصد پر ماہ مارچ میں پہنچ گیا جس کی وجہ غذائی اجناس کی قیمتوں میں جیسے آلو ،پیاز اور پھلوں کی قیمت میں اضافہ ہے ۔ غذائی اشیاء کا افراط زر ٹھوک فروشی کی قیمتوں کے اشاریہ پر مبنی ہوتا ہے۔ ماہ مارچ میں یہ 9.9 فیصد ہوگیا تھا جبکہ فبروری میں یہ 8.12 فیصد تھا ۔آج حکومت نے جو اعداد و شمار جاری کئے

ہیں اس کے بموجب جنوری میں افراط زر 5.17 فیصد تھا ۔ جبکہ قبل ازیں تخمینہ کے بموجب 5.05 فیصد ہونا چاہئے تھا ۔ ماہ مارچ میں آلو کی قیمت میں 27.83 فیصد پیاز کی قیمت میں 1.92 فیصد اور ضروری روزانہ کے استعمال کی اشیاء کی قیمت میں اضافہ ہوگیا تھا۔ ترکاری کی قیمت میں 8.37 ،پھلوں کی قیمت میں 16.15 فیصد اضافہ ہوا ۔ حکومت نے مزید کہا کہ افراط زر میں 2013-14 کے مالی سال میں شرح اضافہ گذشتہ سال کی بہ نسبت 3.70 فیصد زیادہ رہی ۔ گذشتہ مالی سال یہ 5.65 فیصد تھی۔ ایندھن اور توانائی کے شعبہ میں افراط زر میں 11.22 فیصد اضافہ ہوا ۔

TOPPOPULARRECENT