Tuesday , June 19 2018
Home / شہر کی خبریں / غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کے لئے 51 ہزار کی امداد

غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کے لئے 51 ہزار کی امداد

حکومت کے سروے میں حصہ لینے والوں اور سرکاری ملازمین کو سلام، چیف منسٹر کا بیان

حکومت کے سروے میں حصہ لینے والوں اور سرکاری ملازمین کو سلام، چیف منسٹر کا بیان
حیدرآباد /19 اگست (سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ عوام نے جوش و خروش کے ساتھ سروے میں حصہ لیتے ہوئے سروے کو متنازعہ بنانے والوں کا منہ کالا کردیا، جس کے لئے وہ عوام سے اظہار تشکر اور سرکاری ملازمین کو سلام کرتے ہیں۔ آج شام اپنی سرکاری رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو اور تلگو فلم اسٹار جونیر این ٹی آر نے بھی سروے کرنے والوں کو تفصیلات فراہم کیں، جب کہ سارے تلنگانہ بشمول حیدرآباد کے عوام میں سروے کے لئے جوش و خروش دیکھا گیا۔ انھوں نے کہا کہ اگر ہر معاملے میں عوام کا تعاون ان کے ساتھ اسی طرح رہا تو وہ سنہرے تلنگانہ کا خواب بہت جلد پورا کریں گے، کیونکہ دنیا بھر میں اس طرح کا کامیاب سروے کہیں نہیں دیکھا گیا۔ انھوں نے کہا کہ چند قائدین اور جماعتوں نے سروے کو متنازعہ بنانے کی کوشش کی، تاہم عوام نے سروے میں بھرپور حصہ لیتے ہوئے اسے کامیابی سے ہمکنار کیا۔ انھوں نے کہا کہ ملک کی مختلف ریاستوں، شہروں اور خلیجی ممالک میں موجود تلنگانہ کے باشندوں نے اپنے اپنے مقامات پر پہنچ کر سروے میں حصہ لیا، اس طرح اضلاع میں 95 فیصد اور حیدرآباد شہر میں 88 فیصد سروے کا کام مکمل ہوا۔ رات دیر گئے یا کل صبح تک تمام تفصیلات حاصل ہو جائیں گی۔ انھوں نے کہا کہ کل چیف سکریٹری اور دیگر اعلی عہدہ داروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد ہوگا اور جو لوگ سروے سے محروم ہو گئے ہیں، ان کے علحدہ سروے کرانے کا فیصلہ کیا جائے گا۔ علاوہ ازیں سروے سے یہ بھی پتہ چلا کہ عوام نے حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کیا ہے۔ عوام کے جوش و خروش کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ عوام نے عہدہ داروں کو کئی ٹیلیفون کرکے اپنے علاقے میں سروے نہ ہونے کی شکایت کی اور بعض مقامات پر عوام نے راستہ روکو احتجاج بھی کیا۔ انھوں نے سروے میں حصہ لینے اور تعاون کرنے والوں سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ اطلاع کے مطابق طلبہ اور بستی کی تنظیموں نے بھی سروے میں تعاون کیا۔ وہ اس سلسلے میں میڈیا سے اظہار تشکر کرتے ہیں کہ اس نے عوامی شعور بیدار کرنے میں اہم رول ادا کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سروے کے ذریعہ یہ بات سامنے آئی ہے کہ حیدرآباد میں تقریباً 5 لاکھ خاندانوں کا اضافہ ہوا ہے۔ اب تک شہر حیدرآباد میں 15.80 لاکھ مکانات تھے، تاہم اب 20 لاکھ مکانات ہیں اور شہر کی آبادی 1.20 کروڑ تک پہنچ چکی ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ یہ سروے شہر میں پینے کے پانی کی تقسیم، سڑکوں کی تعمیر اور برقی سربراہی میں معاون ثابت ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ بینک اکاؤنٹ طلب کرنے پر واویلا کیا گیا، تاہم وہ بتا دینا چاہتے ہیں کہ ماضی میں غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کے لئے صرف 25 ہزار روپئے معاوضہ دیا جاتا تھا اور جمعرات بازار سے ساز و سامان خریدا جاتا تھا، لیکن بدعنوانیوں کی اطلاع ملنے کے بعد حکومت تلنگانہ نے یہ فیصلہ کیا کہ غریب مسلم لڑکیوں کی شادی پر 51 ہزار روپئے ڈی ڈی کی شکل میں دیئے جائیں، جس کے لئے بینک اکاؤنٹ کا ہونا ضروری ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہندو۔ مسلم لڑکیوں کی شادیوں کے لئے 51 ہزار روپئے امدادی رقم دی جائے گی، لہذا اپوزیشن جماعتیں تنقید برائے تنقید کی بجائے تنقید برائے تعمیر کریں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ سروے کے بعد حکومت کو فیصلہ کرنے میں آسانی ہوگی اور 15 دن کے بعد اس سروے کا ڈاٹا تحصیلدار کے علاوہ چیف منسٹر اور چیف سکریٹری کی میز پر ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ اگر سروے میں کسی طرح کی بے قاعدگی ہوئی ہے تو اس کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ سروے سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ تلنگانہ کی آبادی ساڑھے چار کروڑ تک پہنچ گئی ہے۔ اس کے علاوہ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کی آمدنی میں اضافہ ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT