Sunday , September 23 2018
Home / Top Stories / غزہ متاثرین کیلئے کل قاہرہ میں عطیہ دہندگان کی کانفرنس

غزہ متاثرین کیلئے کل قاہرہ میں عطیہ دہندگان کی کانفرنس

یروشلم 10 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) مصر میں اتوار کو جنگ سے متاثرہ غزہ کیلئے عطیہ دہندگان کی ایک کانفرنس منعقد کی جائیگی جس میں درجنوں ممالک کے نمائندے شریک ہونگے ۔ یہ کانفرنس جنگ سے متاثرہ غزہ کیلئے امداد فراہم کرنے کے مقصد سے منعقد ہو رہی ہے حالانکہ یہ اندیشے بھی ظاہر کئے جا رہے ہیں کہ یہاں ایک بار پھر تشدد شروع ہوگا اور عطیہ دہندگان

یروشلم 10 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) مصر میں اتوار کو جنگ سے متاثرہ غزہ کیلئے عطیہ دہندگان کی ایک کانفرنس منعقد کی جائیگی جس میں درجنوں ممالک کے نمائندے شریک ہونگے ۔ یہ کانفرنس جنگ سے متاثرہ غزہ کیلئے امداد فراہم کرنے کے مقصد سے منعقد ہو رہی ہے حالانکہ یہ اندیشے بھی ظاہر کئے جا رہے ہیں کہ یہاں ایک بار پھر تشدد شروع ہوگا اور عطیہ دہندگان اس جانب متوجہ نہیں ہونگے ۔ اوقام متحدہ کی فلسطینی پناہ گزین ایجنسی نے قاہرہ میں ہونے والی عطیہ دہندگان کی کانفرنس سے قبل معاشی ضروریات کو انتہائی ضروری قرار دیا ہے اور کہا کہ یہاں گذشتہ چھ سال میں تیسری مرتبہ جنگ کی وجہ سے یہاں حالات انتہائی متاثر ہوگئے ہیں۔ اس کانفرنس سے قبل ابھی تاہم یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ عطیہ دہندگان کی کانفرنس میں مختلف ممالک کس قدر فراخدلی کا مظاہرہ کرینگے جبکہ اسرائیل اور فلسطین کے مابین کشیدگی ہنوز پائی جاتی ہے اور بعض گوشوں کو اندیشہ ہے کہ جلد یا بدیر یہاں ایک بار پھر تشدد پھوٹ پڑسکتا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ علاقہ میں شام اور عراق میں تخریب کاروں کے خلاف لڑائی بھی مختلف گوشوں کی ترجیح بن گئی ہے ۔

کہا گیا ہے کہ تقریبا 50 ممالک قاہرہ میں ہونے والی عطیہ دہندگان کانفرنس میںشرکت کرینگے جن میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون ‘ امریکی سکریٹری آف اسٹیٹ جان کیری کے علاوہ 30 ممالک کے وزرائے خارجہ اور مختلف بین الاقوامی مالیاتی اور انسانی اداروں کے نمائندے شرکت کرینگے ۔ فلسطینیوں کا کنا ہے کہ انہیں تقریبا 4 بلین ڈالرس کی امداد کی ضرورت ہے اس کے علاوہ اوقام متحدہ کی فلسطینی پناہ گزین ایجنسی نے کہا ہے کہ اسے 1.6 بلین ڈالرس امداد کی ضرورت ہے ۔ کہا گیا ہے کہ یہاں اسرائیل کے حملوں میں تباہ ہونے والی عمارتوں ‘ مکانات ‘ انفرا اسٹرکچر ‘ نگہداشت صحت ‘ تعلیم اور پینے کے پانی کی فراہمی جیسے کاموں کیلئے 8 بلین ڈالرس کی ضرورت ہے ۔ اسرائیل اور غزہ کے مابین 50 دن تک چلے تشدد میں کم از کم 2,200 فلسطینی ہلاک ہوئے ہیں جن میں بیشتر عام شہری تھی ۔ اسرائیل نے اس جنگ میں کمسن بچوں کو تک نشانہ بنایا تھا ۔ یہ جنگ 26 اگسٹ کوہوئی جنگ نبدی کے بعد ختم ہوگئی تھی جس میں ایک لاکھ فلسطینی باشندے بے گھر ہوئے تھے ۔ ایک مغربی ملک کے سفارتکار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اس کانفرنس میں عطیہ دہندگان کی کمی ضرور محسوس کی جائیگی ۔ اتنی رقومات جمع ہونی مشکل ہے جتنی ضرورت ہے یا امید کی جا رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT