Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / غزہ میں اسرائیلی وحشیانہ حملوں کی مذمت

غزہ میں اسرائیلی وحشیانہ حملوں کی مذمت

راجیہ سبھا میں مسئلہ اٹھانے ہنمنت راؤ کا فیصلہ

راجیہ سبھا میں مسئلہ اٹھانے ہنمنت راؤ کا فیصلہ
حیدرآباد ۔ 19 جولائی (سیاست نیوز) سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ نے غزہ میں جاری اسرائیل کے وحشیانہ حملوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے 21 جولائی کو راجیہ سبھا میں مسئلہ اٹھانے کا اعلان کیا۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے فلسطین کے بشمول خلیجی ممالک کے گہرے اور خوشگوار تعلقات ہیں۔ تاہم بی جے پی کی زیرقیادت این ڈی اے حکومت اسرائیل کی پشت پناہی کرتے ہوئے ہندوستان کی بیرونی پالیسی کو تبدیل کرنے کی منظم سازش کررہی ہے۔ غزہ میں معصوم بچوں کو بے دردی سے موت کے گھاٹ اتار دیا جارہا ہے۔ اقوام متحدہ کی مداخلت ضروری ہے۔ کانگریس پارٹی نے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں تین دن تک اسرائیل کی جارحیت کے خلاف آواز اٹھائی اور مباحث کرنے کا حکومت کو مشورہ دیا۔ تاہم اسرائیل کی گود میں بیٹھنے والی مرکزی حکومت نے کانگریس کے بشمول دوسری اپوزیشن جماعتوں کے احتجاج کو یکسر نظرانداز کردیا۔ یاسر عرفات اور اندرا گاندھی کے دور میں ہند۔ فلسطین تعلقات کو تقویت حاصل ہوئی تھی۔ نہرو سے منموہن سنگھ تک تمام حکومتوں نے خلیجی ممالک سے بہتر تعلقات بنائے رکھے تھے۔ پیر کو کانگریس پارٹی راجیہ سبھا میں اسرائیل کی وحشیانہ کارروائی کو نشانہ بنائے گی۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے آر ایس ایس کے صحافی بی جے پی کے ہمنوا صحافی وید پرتاپ ویدک کی ہندوستان میں دہشت گردی کو فروغ دینے والے جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید سے ملاقات کی سخت مذمت کی اور پاکستان کے سفیر کی جانب سے دونوں کی ملاقات پر لاعلمی کا اظہار کرنے کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ انتخابی مہم میں پاکستانی دہشت گرد حافظ سعید کو ہندوستان لانے کا اعلان کرنے والی بی جے پی نے اقتدار حاصل ہوتے ہی آر ایس ایس ذہنیت کے صحافی ویدک کے ذریعہ حافظ سعید کو محبت کا پیغام روانہ کیا ہے اور کشمیر کو ہندوستان سے الگ کرالینے کا بھی دعویٰ کیا گیا ہے۔ اس سارے معاملہ میں بی جے پی کی خاموشی معنی خیز ہے۔ اگر ویدک کے بجائے کوئی اور شخص حافظ سعید سے ملاقات کرتا تو بی جے پی اس پر ہنگامہ مچا دیتی۔ ملاقات کرنے والے شخص کو دہشت گردی سے جوڑ دیتی اور کانگریس پر اس کی پشت پناہی کرنے اور کانگریس کو مسلمانوں کی جماعت قرار دیتے ہوئے ووٹ بینک کی پالیسی پر عمل کرنے کا الزام عائد کرتی۔

TOPPOPULARRECENT