Monday , June 25 2018
Home / Top Stories / غزہ پٹی میں تعمیر نو کیلئے فلسطین اور اسرائیل کا معاہدہ

غزہ پٹی میں تعمیر نو کیلئے فلسطین اور اسرائیل کا معاہدہ

اقوام متحدہ ۔ 17ستمبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) اسرائیل اور فلسطین اقوام متحدہ کی ثالثی میں غزہ کی ان عمارتوں کی بحالی کے سمجھوتے پر متفق ہو گئے ہیں جو کچھ عرصہ قبل غزہ پر اسرائیلی جارحانہ حملوں کے نتیجے میں تباہ ہوگئی تھیں۔ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون کے مشرق وسطیٰ کیلئے خصوصی ایلچی رابرٹ سیری نے یہ بات بتائی۔ رابرٹ سیری کا کہنا

اقوام متحدہ ۔ 17ستمبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) اسرائیل اور فلسطین اقوام متحدہ کی ثالثی میں غزہ کی ان عمارتوں کی بحالی کے سمجھوتے پر متفق ہو گئے ہیں جو کچھ عرصہ قبل غزہ پر اسرائیلی جارحانہ حملوں کے نتیجے میں تباہ ہوگئی تھیں۔ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون کے مشرق وسطیٰ کیلئے خصوصی ایلچی رابرٹ سیری نے یہ بات بتائی۔ رابرٹ سیری کا کہنا ہے کہ اس سمجھوتے کے مطابق بحالی کے کام کی رہنمائی فلسطینی حکام کریں گے جبکہ اقوام متحدہ کے نمائندے اس کام کی نگرانی کریں گے۔ اس کی بدولت یقین ہے کہ تعمیراتی سامان جنگجوؤں کے ہاتھ نہیں لگے گا بلکہ رہائشی مکانات، ہاسپٹلس اور اسکولوں کی بحالی کیلئے استعمال کیا جائے گا۔اقوام متحدہ میں مشرق وسطی کیلئے سفیررا برٹ سیری نے گزشتہ روز سلامتی کونسل کے ایک اجلاس میں بتایا کہ اس معاہد ہ کے ذریعہ غزہ میں خانگی شعبے کی مدد سے تعمیر نو کا کام مکمل کیا جا سکے گا اور اس عمل میں اہم کردار فلسطینی اتھارٹی ادا کرے گی۔ فلسطینی اتھاریٹی کے اندازوں کے مطابق غزہ پٹی میں تعمیر نو کے کام پر 7.8 بلین ڈالر کی لاگت آئے گی۔ اس حوالے سے ایک ڈونرز کانفرنس 12 اکتوبر کو مصری دارالحکومت قاہرہ میں منعقد ہو گی۔

سب سے اہم بات یہ ہے کہ اسرائل کنسٹرکشن یا تعمیرات میں استعمال ہونے والا کوئی بھی ساز و سامان غزہ کی طرف جانے نہیں دیتا کیونکہ اسے یہ خدشہ ہے کہ یہ سامان حماس کے شدت پسند اسرائیل مخالف تنصیبات کھڑی کرنے کیلئے نہ استعمال کرے۔ تاہم رابرٹ سیری نے کہا کہ اقوام متحدہ اپنے مبصرین کی موجودگی کے ذریعہ یہ یقین دہانی کرا رہا ہے کہ تعمیر نو ک لئے غزہ بھیجے جانے والا ساز و سامان محض شہری مقاصد یا تعمیرنو کیلئے ہی استعمال کیا جائگا۔تاہم سلامتی کونسل کے اجلاس میں اقوام متحدہ کے عہدیداروںنے یہ نہیں بتایا کہ معاہد ہ کے تحت تعمیر نو کا کام کب تک شروع ہو گا تاہم انہوں نے رپورٹروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر معاہدے پر نیک نیتی سے عمل در آمد ہو جاتا ہے، تو اقوام متحدہ جتنا جلدی ہو سکے کام شروع کرنے کیلئے تیارہے۔ واضح رہے کہ سیری نے جاریہ ماہ متاثرہ فلسطینی علاقوں کا دورہ کیا تھا اور ان کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم نے حیران کن حد تک تباہی دیکھی ہے۔ رابرٹ سیری کے مطابق غزہ میں اسرائیل اور فلسطینیوں کی پچھلے دنوں جاری رہنے والی لڑائی کے نتیجے میں 18000 مکانات برباد ہوئے، جن کی وجہ سے قریب ایک لاکھ افراد بے گھر ہو گئے، جن میں سے قریب 65000 اب بھی اقوام متحدہ کی پناہ گاہوں میں زندگی گزار رہے ہیں۔ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان جاریہ سال ہونے والے مسلح تصادم کے نتیجے میں 2100 سے زائد فلسطینی ہلاک ہوئے، جن میں 500 بچے اور 250 عورتیں بھی شامل تھیں۔

TOPPOPULARRECENT