Thursday , May 24 2018
Home / Top Stories / غوطہ میں 400 ہلاکتیں ،کرہ ارض پر جہنم کا منظر: اقوام متحدہ

غوطہ میں 400 ہلاکتیں ،کرہ ارض پر جہنم کا منظر: اقوام متحدہ

بشار الاسد روس کی مدد سے جنگی جرائم کے مرتکب، امریکہ کا الزام، بدترین فوجی کارروائی

واشنگٹن۔23 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج کہاکہ شام کے صدر بشار الاسد نے اپنے ہی عوام کے خلاف روس کی مدد سے جنگی جرائم کا ارتکاب کیا ہے اور باعیوں کے طاقتور گڑھ سمجھے جانے والے علاقہ غوطہ میں سینکڑوں شامی مرد وخواتین اور بچوں کی ہلاکت کے لیے بشارالاسد کی حکومت اور روس کے خلاف نوٹسیں جاری کی گئی ہے۔ وہائٹ ہائوز کے پریس سکریٹری راج شاہ نے کہا کہ شام کی صورتحال پر امریکہ نظر رکھا ہوا ہے۔ جہاں باغیوں کے زیر کنٹرول علاقوں پر فضائی حملوں اور بمباری سے گزشتہ پانچ دن میں 600 افراد ہلاک اور دیگر سینکڑوں زخمی ہوگئے ہیں۔ انہوں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پہلے ہی وہ اپنے عوام پر زہریلی سیرین گیاس استعمال کرچکے ہیں وہ ایسی کئی کارروائیاں کرچکے ہیں جن کا تصور تک نہیں کیا جاسکتا۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ سمجھتے ہیں کہ شامی صدر بشارالاسد نے جنگی جرائم کا ارتکاب کیا ہے۔ راج شاہ نے دعوی کیا کہ روس کی تائید و مدد سے بشارالاسد جنگی جرائم کا ارتکاب کررہے ہیں اور ہم نہیں چاہتے کہ یہ سلسلہ جاری رہے۔ امریکہ اس صورتحال پر نظر رکھا ہوا ہے۔ اس سوال پر کہ وہ ہلاکتوں کو روکنے ٹرمپ انتظامیہ کیا اقدامات کررہا ہے۔ راج شاہ نے جواب دیا کہ ’’ہم اس ضمن میں فی احال ایسے کسی اقدام پر پیشرفت کرنا نہیں چاہتے جس کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم اگر ضروری ہو تو ایسی کوئی بھی کارروائی کی جاسکتی ہے جس کا اعلان کیا جاسکتا ہے۔ لیکن آپ جانتے ہیں کہ امریکہ نے بشارالاسد اور روس کی کا رروائیوں کا نوٹ لیا ہے۔ وزارت خارجہ کی ترجمان ہیتھر ٹاڈریٹ نے ایک علیحدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شامی حکومت کے حملوں میں 400 سے زادء شہری ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم سب جانتے ہیں کہ انہیں (بشارالاسد حکومت کو) نہ صرف روس بلکہ ایران کی تائید و مدد بھی حاصل تھی۔ یہ واقعات اس حقیقیت کو یاد دلاتے ہیں کہ وہاں جو کچھ ہورہا ہے اس کی ایک منفرد ذمہ داری روس پر بھی عائد ہوتی ہے۔ روس اگر شام کی تائید نہ کرتا تو اس تباہ کن و خوفناک ہلاکتیں بھی نہ ہوتیں۔ نیویارک میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں شام کے مسئلہ پر منعقدہ اجلاس میں امریکہ نے 15 رکنی ادارہ سے انسانی و جنگ بندی قرارداد کی فی الفور پیشکشی کا مطالبہ کیا۔ امریکی مندوب برائے سماجی و معاشی امور کیلی کیوری نے کہا کہ ہر طرف ایسی کئی تصویریں اور ویڈیو کلپس گشت کررہی ہیں جن میں کئی غمزدہ ماں باپ منہدم عمارتوں کا ملبہ ہٹاتے ہوئے اپنے بچوں کو تلاش کررہے ہیں۔ امریکہ نے شام کے مشرقی علاقہ غوطہ میں بشارالاسد کے فورسس کی طرف سے جاری فصائی حملوں کو فی الفور بند کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ باغیوں کے زیر کنٹرول علاقہ میں بمباری کے بعد گزشتہ روز بھی درجنوں افراد ہلاک اور دیگر سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں۔ کیلی کیوری نے مزید کہا کہ اس علاقہ (غوطہ) کے ان عبوری ٹھکانوں اور ایمرجنسی رومس میں دہشت گرد نہیں بلکہ شہری عوام پناہ لیے ہوئے ہیں۔ یہ عام آدمی ہیں جو مشرقی غوطہ میں بشارالاسد حکومت کے بربریت انگیز حملوں کی زد میں آرہے ہیں۔ سارا علاقہ زمین دوز ہوگیا ہے اور خوزدہ عوام اپنے ٹھکانے چھوڑ کر دوسرے مقامات کو چلے جانا چاہتے ہیں۔ اس دوران اقوام متحدہ کے ایک عہدیدار نے کہا کہ ان کے دفتر کو بمباری کا سامنا کرنے والے مرد و خواتین اور بچوں سے ہزاروں پیغامات موصول ہوئے ہیں۔ انہوں نے اس علاقہ میں جاری فوجی کارروائیوں کو بند کرنے کا مطالبہ کیا۔ اقوام متحدہ کے انڈرسکریٹری جنرل اور ہنگامی امداد کے رابطہ کار مارک لوکاک نے کہا کہ اقوام متحدہ کی ایجنسیوں نے کرہ ارض پر جہنم کا منطر پیش کیا ہے۔ چنانچہ اس علاقہ میں فوجی کارروائیوں کو روکتے ہوئے فی الفور امکانی امداد رسانی، زخمیوں اور بیماروں کے علاج پر توجہ دی جائے۔ لیکن شامی عوام کے آلام و مصائب کا خاتمہ کیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT